’کورونا وائرس سے بچنے کے لیے لاک ڈاﺅن نہ کرنا بڑی غلطی تھی‘ یورپی ملک کے بادشاہ نے اعتراف کرلیا

’کورونا وائرس سے بچنے کے لیے لاک ڈاﺅن نہ کرنا بڑی غلطی تھی‘ یورپی ملک کے ...
’کورونا وائرس سے بچنے کے لیے لاک ڈاﺅن نہ کرنا بڑی غلطی تھی‘ یورپی ملک کے بادشاہ نے اعتراف کرلیا
سورس: Wikimedia Commons

  

سٹاک ہوم(مانیٹرنگ ڈیسک) بیشتر دنیا کے برعکس چند ممالک نے کورونا وائرس کا پھیلاﺅ روکنے کے لیے لاک ڈاﺅن نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا مگر یہ فیصلہ غلط ثابت ہوا ہے اور ان ممالک میں لوگ اس موذی وباءسے شدید متاثر ہوئے۔ سویڈن بھی انہی چند ممالک میں سے ایک تھا جہاں کے بادشاہ نے بھی اب حکومت کی غلطی کا اعتراف کر لیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق بادشاہ کارل گسٹاف نے کہا ہے کہ ”سویڈن کا لاک ڈاﺅن نہ کرنے کا فیصلہ غلط تھا جس کی وجہ سے لوگ اس وباءسے بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔ کورونا وائرس کو روکنے کے لیے حکومت نے جو حکمت عملی اپنائی تھی وہ بری طرح ناکام ہوئی ہے۔“

بادشاہ کا کہنا تھا کہ ”اس ناکامی کی وجہ سے کورونا وائرس کے سبب خوفناک حد تک ہلاکتیں ہوئیں اور متاثرہ کی شرح بھی بہت زیادہ رہی۔ اگر لاک ڈاﺅن کر دیا جاتا تو ممکنہ طور پر بہت حد تک اس خوفناک صورتحال سے بچا جاسکتا تھا۔“ واضح رہے کہ سویڈن میں کورونا وائرس آنے کے بعد سے لاک ڈاﺅن نہیں کیا گیا۔ ملک بھر میں دکانیں، شاپنگ مالز، ریسٹورنٹس اور دیگر عوامی مقامات پہلے کی طرح کھلے رہے۔ سویڈن کی حکومت بھی اس سے پہلے اپنی ناکامی تسلیم کر چکی ہے اور اس حوالے سے بنائے گئے تحقیقاتی کمیشن نے یہاں تک اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ نرسنگ ہومز میں لوگوں کو کورونا وائرس سے بچانے کے لیے بھی انتہائی معمولی اقدامات کیے گئے تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -