مقامی سطح پر تیار کی جانیوالی گاڑیوں کی فروخت کا حجم 74 ہزار 497 یونٹس ہو گیا

مقامی سطح پر تیار کی جانیوالی گاڑیوں کی فروخت کا حجم 74 ہزار 497 یونٹس ہو گیا

  



اسلام آباد(اے پی پی) رواں مالی سال 2014-15ء کے پہلے سات ماہ میں جولائی 2014ء تا جنوری2015ء کے دوران مقامی طور پر تیار کی جانے والی گاڑیوں کی فروخت میں 9ہزار663 یونٹس کا اضافہ ہوا ہے۔ پاکستان آٹوموٹیو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن(پاما) کے اعدادوشمار کے مطابق جاری مالی سال کے ابتدائی سات مہینوں کے دوران ملک میں تیار کی جانے والی گاڑیوں کی فروخت کا حجم 74 ہزار497 یونٹس تک بڑھ گیا ہے جبکہ گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران ملک میں تیار کی جانے والی 64 ہزار834 گاڑیاں فروخت کی گئی تھیں۔ پاما کی رپورٹ کے مطابق جاری مالی سال کے ماہ جنوری2015ء کے دوران گاڑیوں کی فروخت میں نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جو گذشتہ مالی سال کے ماہ جنوری 2014ء کے دوران 9 ہزار522 یونٹس تھی، سے بڑھ کر15 ہزار770 یونٹس تک پہنچ گیا۔ اس طرح گذشتہ مالی سال کے ماہ جنوری کے مقابلہ میں رواں مالی سال میں جنوری کے دوران گاڑیوں کی فروخت میں6 ہزار248 یونٹس کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ شرمین سیکیورٹیز کے تجزیہ کار عدنان حیدر نے کہا ہے کہ جنوری2015ء کے دوران فروخت ہونے والی ملک میں تیار کی جانے والی گاڑیوں کی تعداد گذشتہ اڑھائی سال میں سب سے زیادہ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گاڑیوں کی فروخت میں اضافہ کا بنیادی سسب نئے ماڈل کی ملک میں تیار ہونے والی گاڑیوں کی طلب میں ہونے والا اضافہ ہے جبکہ افراط زرکی شرح میں کمی، کارفنانسنگ کی سہولت پر سود کی شرح میں کمی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی بھی گاڑیوں کی فروخت میں ہونے والے اضافے کے اسباب میں شامل ہیں۔   عدنان حیدر نے کہا ہے کہ جنوری2015ء کے دوران فروخت ہونے والی گاڑیوں میں حکومت پنجاب کی اپنا روزگارسکیم کے تحت دی جانے والی گاڑیاں شامل نہیں لیکن اس کے باوجود رواں مالی سال میں جنوری کے دوران ملک میں تیار کی جانے والی گاڑیوں کی فروخت میں ہونے والے اضافہ سے مقامی صنعت پر خوشگوار اثرات مرتب ہونگے۔

مزید : کامرس