دہشت گرد حمیداللہ کی اپیل مسترد ،69بار سزائے موت اورعمر قیدکی سزابرقرار

دہشت گرد حمیداللہ کی اپیل مسترد ،69بار سزائے موت اورعمر قیدکی سزابرقرار

  



لاہور (نامہ نگارخصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے واہ کینٹ کے داخلی دروازے پر خودکش دھماکوں کے مرکزی کردارکالعدم تنظیم کے دہشت گرد حمیداللہ کی اپیل مسترد کرتے ہوئے اسے انسداد دہشت گردی کی عدالت سے ملنے والی69بار سزائے موت، ایک بار عمر قید،اورجرمانے کی سزائیں برقرار رکھیں ۔ فاضل بنچ نے انسداد دہشت گردی کی عدالت کی طرف سے مجرم کی سزائے موت کی توثیق کے لئے بھجوایا گیا ریفرنس بھی منظور کرلیا ۔استغاچہ کے مطابق 21اگست2008 کو حمیداللہ نے ساتھیوں سمیت واہ کینٹ پر حملہ کیا۔ سکیورٹی ایجنسیوں کی طرف سے مزاحمت کرنے پر دو خودکش حملہ آوروں نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا جبکہ حمیداللہ خودکش جیکٹ اور ہینڈ گرینیڈ سمیت موقع سے گرفتار کر لیا گیا۔ خودکش دھماکوں میں69افراد جاں بحق اور44زخمی ہوئے تھے۔ملزم حمیداللہ بھی خودکش بمبار تھا جو جیکٹ نہ چلا سکا اور موقع سے زخمی حالت میں گرفتار ہوا۔ ملزم پرراولپنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نمبرII میں مقدمہ چلایا گیا جہاں21جنوری 2011کو اسے 69بار سزائے موت، ایک بار عمر قید اور 80بار 10،10سال قید بامشقت اور جرمانے کی سزائیں سنائی گئیں۔حمید اللہ نے انسداد دہشت گردی عدالت کے فیصلے کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ لاہور ہائیکورٹ کے راولپنڈی بینچ نے فیصلہ سناتے ہوئے انسداد دہشت گردی عدالت کا فیصلہ برقرار رکھا اور ملزم کی اپیل خارج کر دی ۔

مزید : صفحہ آخر