سزائے موت کے قیدی کی اپیل منظور ،عدم ثبوت کی بنیادپربری کردیاگیا

سزائے موت کے قیدی کی اپیل منظور ،عدم ثبوت کی بنیادپربری کردیاگیا

  



لاہور (نامہ نگارخصوصی )لاہورہائیکورٹ کے دورکنی بنچ نے قلعہ گوجرسنگھ کے علاقہ میں نبیل امجد کے قتل کے الزام میں سزائے موت پانے والے قیدی عدیل لیاقت کی اپیل منظور کرتے ہوئے اسے عدم ثبوت کی بنیادپربری کردیا۔ عدیل لیاقت کی طرف سے موقف اختیارکیا گیاکہ تھانہ قلعہ گوجرسنگھ میں نبیل امجد کے قتل کے الزام میں تین ملزمان کے خلاف مقدمہ درج ہوا۔ قتل کے وقوعہ کا کوئی چشم دید گواہ نہیں ہے۔ گواہوں کے بیانات میں تضاد اورناکافی شواہد پر ایڈیشنل سیشن جج لاہورنے ملزم کی والدہ نگینہ اوربہنوئی کاشف کو بری جبکہ ملزم کو ٹھوس شواہد نہ ہونے کے باوجود سزائے موت کا حکم سنایا۔ وکیل صفائی نے کہا کہ فرانزنک سائنس لیبارٹری رپورٹ کے مطابق بھی گولیوں کے خول اورآلہ قتل میں مطابقت نہیں پائی جاتی۔ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل میاں اویس مظہر نے کہا کہ ملزم پولیس تفتیش میں قصوروارہے اورمقتول کو زخمی حالت میں ملزمہ نگینہ اورملزم عدیل لیاقت کے گھر سے ریسکیو 1122کے ذریعے سروسز ہسپتال پہنچایاگیاتھا، عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد سزائے موت کے قیدی عدیل لیاقت کو بری کرنے کا حکم دے دیا۔

مزید : صفحہ آخر