فرقہ واریت کو ایک منصوبے کے تحت ہوا دی جا رہی ہے، منظور وٹو

فرقہ واریت کو ایک منصوبے کے تحت ہوا دی جا رہی ہے، منظور وٹو

  



 لاہور( نمائندہ خصوصی)اچھے اور برے طالبان میں کوئی فرق نہیں، یہ تمام مسلمان ہیں اور نہ ہی پاکستانی۔ یہ بات پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے مقامی یونیورسٹی کے طالبعلموں کے ایک وفد سے پارٹی سیکر یٹریٹ میں باتیں کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ قوم دہشتگردی کو شکست دینے کے لیے متحد ہے اور اسکی کامیابی یقینی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرب عضب آپریشن دہشتگردوں کے خلاف کامیابی سے جاری ہے اور تمام قوم فوج کے پیچھے کھڑی ہے۔ انہوں نے فرقہ واریت کے واقعات کے حالیہ اضافے پر سخت تشویش کا اظہار کیا کہ مسلمانوں کو مسجدوں، امام بارگاہوں، سفر کے دوران اور مزاروں پر ٹارگٹ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ مذہبی انتہاء پسند معصوم لوگوں کو قتل و غارت کی ترغیب دیتے ہیں ، اکثریت علماء کی امن اور سلامتی کی داعی ہے جبکہ کچھ مفاد پرست علماء فرقہ واریت کو ہوا اس لیے دیتے ہیں تا کہ وہ اپنی اہمیت کا احساس دلا سکیں۔ فرقہ واریت کو ایک منصوبے کے تحت ہوا دی جا رہی ہے۔ غیر قانونی تنظیمیں سارے ملک میں پھیلی ہوئی ہیں لیکن ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حکومت انکے سامنے لیٹی ہوئی ہے۔میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ مغربی سرحدوں پر باڑ لگانے کے لیے بین الاقوامی مدد حاصل کرنی چاہیے۔ منظور وٹو

مزید : صفحہ آخر


loading...