آرٹیکل 62 اور 63 پر عملدار آمد نہ کروانے پر الیکشن کمیشن سے جواب طلب

آرٹیکل 62 اور 63 پر عملدار آمد نہ کروانے پر الیکشن کمیشن سے جواب طلب

  



 لاہور (نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے عدالت میں یقین دہانی کے باوجود سینٹ کے انتخابات میں آئین کے آرٹیکل 62 اور63پر عملدرآمد نہ کرانے کے خلاف دائر درخواست پر الیکشن کمیشن سے 17مارچ تک جواب طلب کر لیا۔مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے چیئرمین اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی متفرق درخواست پر سماعت شروع کی تو درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ الیکشن کمیشن میں عدالت میں یقین دہانی کرائی تھی کہ سینٹ کے انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کی آئین کے آرٹیکل 62 اور 63کے تحت سکروٹنی کی جائیگی مگر الیکشن کمیشن کاغذات نامزدگی جمع ہونے کے باوجود سکروٹنی کے لئے طریقہ کار وضع کرنے میں ناکام ہو چکا ہے ، انہوں نے بتایاکہ الیکشن کمیشن کی ان ہی کمزوریوں کے باعث بینک ڈیفالٹر، چور اور کرپٹ افراد اسمبلیوں میں پہنچ جاتے ہیں اور ایسا ہی سینٹ کے انتخابات میں بھی ہونے جار رہا ہے، وکیل نے مزید کہا کہ عدالت پہلے بھی کہہ چکی ہے کہ بظاہر سینٹ انتخابات میں قوم کے ساتھ فراڈ کیا جا رہا ہے۔ الیکشن کمیشن

مزید : صفحہ آخر


loading...