جوہری مذاکرات، ایران کے روحانی پیشواءنے وزیرخارجہ کو ہنس کر بات کرنے کی ہدایت کردی

جوہری مذاکرات، ایران کے روحانی پیشواءنے وزیرخارجہ کو ہنس کر بات کرنے کی ...
جوہری مذاکرات، ایران کے روحانی پیشواءنے وزیرخارجہ کو ہنس کر بات کرنے کی ہدایت کردی

  



تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) انسان اپنی ضروریات پوری کرنے یا مفادات کے حصول کیلئے طرح طرح کے ہتھکنڈے اپناتاہے اور ایسے ہی ایرا کے روحانی پیشوا آیت اللہ خامنہ ای بھی کسی سے پیچھے نہیں رہے اور وزیر خارجہ کو ملک کے جوہری پروگرام کے بارے میں عالمی مذاکرات کے دوران مسکرا کر بات کرنے کی ہدایت کردی تاہم ماحول خوشگوار رہے اور معاملات خوش اسلوبی سے نمٹ جائیں جس کا انکشاف خود وزیرخارجہ نے کیا۔

ایرانی میڈیا کے مطابق وزیرخارجہ جاوید ظریف دوران مذاکرات اپنے امریکی ہم منصب سے زیادہ اونچی آواز میں بات کرتے تھے اور کئی مرتبہ تو محافظو ں کو یہ دیکھنا پڑتاتھاکہ سب کچھ ٹھیک چل رہاہے یانہیں ۔

جاوید ظریف نے ایک سکول کے دورے کے موقع پرانکشاف کیاکہ جب وہ آیت اللہ خامنہ ای سے ملے تو انہوں نے پوچھ لیا کہ آپ مذاکرات کے دوران چیختے کیوں ہیں؟ آپ نے جو کچھ کہنا ہو اسے مسکراہٹ کے ساتھ کہا کیجیے۔یادرہے کہ جنوری کے مہینے میں جاوید ظریف پر جان کیری کے ساتھ دوستانہ رویہ رکھنے پر ایران کے سخت گیر رہنماو¿ں کی جانب سے کڑی تنقید کی گئی تھی جس پر جاوید ظریف کو وضاحت دینی پڑی تھی تاہم ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا تھا کہ جوہری مذاکراتی ٹیم پر تنقید ایران کے قومی مفادات کے خلاف ہے۔

مزید : بین الاقوامی