بگڑے بھارتی رئیس نے دیر سے گیٹ کھونے پر گارڈ کو موت کےگھاٹ اتار دیا

بگڑے بھارتی رئیس نے دیر سے گیٹ کھونے پر گارڈ کو موت کےگھاٹ اتار دیا
بگڑے بھارتی رئیس نے دیر سے گیٹ کھونے پر گارڈ کو موت کےگھاٹ اتار دیا

  



ممبئی(نیوزڈیسک)غربت اور پسماندگی کے شکار لاچاروں پر مالدار اور طاقتور لوگ ہمیشہ سے ظلم و ستم کرتے آئے ہیں لیکن بھارتی ریاست کیرالہ میں ایک ریئس شخص نے اپنے ملازم کو جس طرح اپنی قیمتی گاڑی کے نیچے کچل کر ہلاک کیا ایسے سفاک جرم کی مثال کم ہی ملتی ہے۔

بھارت کی مشہور کاروباری شخصیت کے طور پر جانے جانے والے محمد نشام کا شمار تمباکو کے بہت بڑے تاجروں میں ہوتا ہے اور وہ بھارت اور مشرق وسطیٰ میں کئی ہوٹلوں کے مالک بھی ہیں۔ وہ اپنے محل کے دروازے پر موجود گارڈ پر اس وجہ سے شدید برہم ہوگئے کہ اس نے دروازہ کھولنے میں سستی کا مظاہرہ کیا تھا۔ مقامی پولیس کے افسر بجو کمار کا کہنا ہے کہ نشام نے گارڈ کے پیچھے گاڑی دوڑائی اور اسے ایک دیوار کے ساتھ بھینچ دیا۔ اس کے بعد وہ گاڑی سے نکلے اور لوہے کی سلاخ سے گارڈپر حملہ آور ہوگئے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ 50 سالہ گارڈ کے چندرا بوس کو گہرے اندرونی زخم آئے اور ان کے دل نے کام کرنا بند کردیا جس کی وجہ سے ان کی موت ہوگئی۔

نشام اس وقت پولیس کی حراست میں ہیں اور ان کے خلاف قانونی کارروائی جاری ہے۔ وہ اس سے پہلے بھی کئی کیسز میں مطلوب رہے ہیں لیکن ہمیشہ ضمانت پر رہا ہوجاتے رہے ہیں۔ ان پر ایک مقدمہ اپنے نوسالہ بیٹے کو تنہا فراری کار سڑک پر لے جانے کی اجازت دینے کی وجہ سے قائم کیاگیا مگر وہ جرمانہ ادا کرکے رہا ہوگئے۔

مزید : انسانی حقوق