برطانیہ،یورپی خاتون کو کچھ یاد نہ رہالیکن پھر بھی پاکستانی سمیت دو افراد پر جنسی زیادتی کا الزام لگا دیا

برطانیہ،یورپی خاتون کو کچھ یاد نہ رہالیکن پھر بھی پاکستانی سمیت دو افراد پر ...
برطانیہ،یورپی خاتون کو کچھ یاد نہ رہالیکن پھر بھی پاکستانی سمیت دو افراد پر جنسی زیادتی کا الزام لگا دیا

  



برمنگھم (نیوز ڈیسک)خواتین کے خلاف جرائم کے واقعات بدقسمتی سے دنیا میں ہر جگہ پیش آ رہے ہیں مگر بعض اوقات یہ واقعات عجیب و غریب پراسرار صورت بھی اختیار کر لیتے ہیں۔ برطانیہ میں خاتون نے 24 سالہ مارئیس پر الزام لگایا کہ اس نے اسے عصمت دری کا نشانہ بنایا ہے۔

پولیس نے جب معاملے کی تحقیقات کیں تو معلوم ہوا کہ خاتون کو ایک نہیں بلکہ دو مردوں نے زیادتی کا نشانہ بنایا تھا مگر حیرت کی بات یہ ہے کہ خاتون کو دوسری بار عصمت دری کے بارے میں کچھ معلوم نہیں۔ دوسری بار عصمت دری کا الزام ایک ایشیائی باشندے 39 سالہ آفتاب پر لگایا ہے اور اس نے اب اپنے جرم کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔

خاتون ایسکس شہر میں ایک پارٹی میں شرکت کے بعد شدید نشے کی حالت میں اپنے گھر پہنچنے کی کوشش کر رہی تھی۔ اس نے پہلے مارئیس سے مدد مانگی جو اسے ایک فلائی اور کے نیچے لے گیا اور اسے جنسی درندگی کا نشانہ بنا ڈالا۔ اس کے بعد خاتون نے سڑک پر ایک گاڑی کو رکنے کا اشارہ کیا اور اسمیں سوار گارڈ آفتاب سے لفٹ مانگی۔ خاتون کا کہنا ہے کہ اسے آفتاب سے لفٹ مانگنے کی بات یا اس کی زیادتی کا نشانہ بننے سے متعلق کچھ بھی یاد نہیں۔ دوسری طرف پولیس کا کہنا ہے کہ خاتون کے ڈی این اے ٹیسٹ سے معلوم ہوا ہے کہ اس رات دو مردوں نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

اگر آپ بھی خوبصورت نوجوان خاتون ہیں تو یہ تحقیق آپ کیلئے ہے

جب ڈی این اے کی مدد سے آفتاب کو گرفتار کیا گیا تو اس نے جرم کا اعتراف کر لیا۔ اس کا کہنا تھا کہ اس نے خاتون کو لفٹ دی تھی اور یہ بھی کہا ہے کہ خاتون نے خود مطالبہ کیا تھا جس کے باعث اس نے بھی اپنا فیصلہ تبدیل کیا اور جو کیا وہ خاتون کی خواہش پر کیا۔ پولیس کے مطابق خاتون کو گہرے نشے کی وجہ سے نصف شب سے لے کر صبح تک کے واقعات یاد نہیں ہیں۔ دونوں مجرموں پر فردجرم عائد کر دی گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...