وہ ملک جس کی سرحدوں میں ترک طیارے 24 گھنٹوں میں 22 مرتبہ زبردستی گھس آئے اور پھر آخر کار ترکی کو زوردار جواب دے دیا گیا، بڑا خطرہ

وہ ملک جس کی سرحدوں میں ترک طیارے 24 گھنٹوں میں 22 مرتبہ زبردستی گھس آئے اور پھر ...
وہ ملک جس کی سرحدوں میں ترک طیارے 24 گھنٹوں میں 22 مرتبہ زبردستی گھس آئے اور پھر آخر کار ترکی کو زوردار جواب دے دیا گیا، بڑا خطرہ

  

ایتھنز (مانیٹرنگ ڈیسک) روس اور ترکی کے درمیان فضائی حدود کی خلاف ورزی کی بناءپر پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد گزشتہ روز یہی صورتحال یونان اور ترکی کے درمیان بھی پیش آ گئی، اور معاملہ دیکھتے ہی دیکھتے انتہائی خطرناک رخ اختیار کر گیا۔

یونانی خبررساں ایجنسی ”ایتھنز نیوز“ کا کہنا ہے کہ ترک جنگی طیاروں نے گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران یونانی فضائی حدود کی 22 مرتبہ خلاف ورزی کی، جس کا جواب دینے کے لئے یونانی جنگی طیارے فضاءمیں بلند ہو گئے اور صورتحال خطرے کی آخری حدوں کو چھونے لگی۔ یونانی نیوز ایجنسی کے مطابق ترکی کے چھ جنگی طیارے اور ایک نیوی ٹرانسپورٹ طیارہ یونان کے بحیرہ ایجین پر پرواز کرتے رہے اور یہ طیارے 22 دفعہ مشرقی اور وسطی ایجین جزائر کی حدود میں داخل ہوئے۔ یونانی حکام کا کہنا ہے کہ ترک طیاروں کی فضائی خلاف ورزیوں کے بعد صورتحال انتہائی حساس ہوگئی جو کسی بھی وقت قابو سے باہر ہوسکتی تھی۔

مزید جانئے: ترکی کا زور دار جواب، ترک وزیراعظم ایک ایسے ملک جاپہنچے کہ روس کو غصے سے آگ بگولا کردیا، دونوں ممالک کے درمیان نیا تنازعہ

یونان بحیرہ ایجین کے 10 کلومیٹر کے علاقے کو اپنی فضائی حدود میں شامل سمجھتا ہے جبکہ ترکی اس میں سے صرف 6 کلومیٹر کو تسلیم کرتا ہے۔ دونوں ممالک کے جنگی طیاروں کا آمنا سامنا اکثر متنازعہ چار کلومیٹر کے علاقے میں ہی ہوتا ہے۔ یونان اس سے پہلے بھی ترک جنگی جہازوں کو اپنی فضائی حدود کی خلاف ورزی کا مرتکب قرار دے چکا ہے جبکہ ترکی کی طرف سے ان دعوﺅں کو ہمیشہ بے بنیاد قرار دیا گیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی