پاکستانی سائنسدانوں نے پنجاب میں 11 لاکھ سال پرانی ایسی چیز دریافت کرلی کہ دنیا دنگ رہ گئی، بڑی کامیابی

پاکستانی سائنسدانوں نے پنجاب میں 11 لاکھ سال پرانی ایسی چیز دریافت کرلی کہ ...
پاکستانی سائنسدانوں نے پنجاب میں 11 لاکھ سال پرانی ایسی چیز دریافت کرلی کہ دنیا دنگ رہ گئی، بڑی کامیابی

  

جہلم (مانیٹرنگ ڈیسک) آج سے لاکھوں سال قبل کرہ ارض پر کئی عجیب الخلقت جانور پائے جاتے تھے جن کے بارے میں آج ہم صرف قصے کہانیوں ہی سنتے ہیں، لیکن پاکستانی سائنسدانوں نے ایک ایسے ہی جانور کی 11 لاکھ سال پرانی باقیات دریافت کر کے دنیا کو حیران کردیا ہے۔

الجزیرہ ٹی وی کے مطابق پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ زوالوجی کے سائنسدانوں نے جہلم شہر کے نواحی گاﺅں میں لاکھوں سال قبل زمین پر پائے جانے والے ہاتھی سے ملتے جلتے جانور کے دانت دریافت کئے ہیں۔ پروفیسر محمد اختر کی سربراہی میں تحقیق کرنے والی ٹیم کو ایک قدیم ہاتھی دانت اپنی مکمل حالت میں ملا ہے، جس کی لمبائی تقریباً 8 فٹ اور موٹائی تقریباً 8 انچ ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ عظیم الجسہ جانور تقریباً ایک کروڑ سے دس لاکھ سال قبل کے زمانے میں زمین پر پایا جاتا تھا۔ ماہرین کے مطابق سٹیگو ڈونٹ کہلانے والے اس جانور کا جس دور میں خاتمہ ہوا تقریباً اسی دور میں زمین پر نسل انسانی کا ظہور ہوا، البتہ یہ واضح نہیں کہ آیا اس جانور کا خاتمہ انسانی شکار کی وجہ سے ہوا یا اس کی کوئی اور وجہ تھی۔

مزید جانئے: سالوں پہلے 10 کروڑ انسانوں کو نگل جانے والی خوفناک بیماری دوبارہ منظر عام پر آگئی، دنیا کیلئے سب سے بڑا خطرہ

قدیم ہاتھی دانت کی عمر کی تصدیق یورینیم ریڈیو ایکٹو ڈیٹنگ کی تکنیک سے کی گئی اور اسے قدرتی آثار قدیمہ کے شعبے میں بہت بڑی کامیابی قرار دیا جارہا ہے۔ یونیورسٹی آف والن گونگ آسٹریلیا کے روفیسر ڈاکٹر گیرٹ وان ڈین برگ کا کہنا تھا کہ قدیم عہد کے جانوروں کی باقیات کا مکمل حالت میں دریافت ہونا بہت بڑی کامیابی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس دریافت کے نتیجے میں لاکھوں سال قبل زمین پر پائے جانے والے سٹیگو ڈونٹ نامی ہاتھی نما جانور کے بارے میں مزید تفصیلات حاصل ہوسکیں گی۔ انہوں نے اس دریافت کو بین الاقوامی سطح کا اہم واقعہ قرار دیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس