50 سال بعد بھی مالکان کو ایل ڈی اے سکیموں میں پلاٹ نہ مل سکے

50 سال بعد بھی مالکان کو ایل ڈی اے سکیموں میں پلاٹ نہ مل سکے

لاہور(اپنے خبر نگار سے)لاہور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کی سکیموں میں پلاٹوں کے حصول کے لئے کئی عشرے بیت گئے اور اراضی مالکان کے پلاٹوں کی ایگزیمشن نہ ہو سکی درخواست دیتے وقت جوان تھے اب دادان گئے ہیں اور ابھی تک لا حاصل ہیں عدالت کے آرڈرز کے باوجود اتھارٹی پلاٹ دینے میں ناکام ہے تفصیلات کے مطابق لاہور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کی رہائشی سکیموں میں کئی عشریوں سے زمین مالکان ایگزیمشن سے محروم ہیں بعض سکیموں میں تو 50سال سے بھی زیادہ عر صہ بیت گیا ہے اور مالکان پلاٹ کے حصول میں ناکام ہیں جن میں گلبرگ گارڈن ٹاؤن میں لوگ 50سالوں میں اپنی اراضی کی ایگزیشن حاصل کرنے میں ناکام ہیں جبکہ گلشن راوی سکیم علامہ اقبال ٹاؤن سکیم اور فیصل ٹاؤن سکیم میں لوگ پچھلے40سالوں سے پلاٹوں کے حصول میں محروم ہیں جبکہ ایم اے جوہر ٹاؤن تاجپورہ سکیم گجر پورہ سکیم اور سبزازار سکیم اراضی مالکان بھی پچھلے30سالوں سے پلاٹوں سے محروم ہیں اور موہلنوال سکیم میں بھی زمین مالکان 15سالوں سے اراضی کے بدلے ملنے والے پلاٹوں سے ابھی تک ناکام ہیں حیرانی والی بات یہ ہے کہ ان میں سے بیشتر پلاٹوں کے لئے تو عدالت کی طرف سے باقاعدہ آرڈرز ہیں کہ ان کو پلاٹ فوری دئیے جائیں لیکن اس کے باوجود اتھارٹی نے ابھی تک ان اراضی کالکان کو پلاٹ ایگزیمٹ نہیں کئے جس کی وجہ سے اراضی ماکان میں بڑی تشویش پائی جاتی ہے مالکان کا کہنا ہے کہ اتنا عرصہ گزرنے کے باوجود ہمیں پلاٹ نہیں دئیے جارہے ہیں اگر اتھارٹی نے پلاٹ نہیں دینے تھے تو پھر ہماری زمین کیوں ایکوائر کی تھی ایک بزرگ جن کی عمر 80سال سے بھی زیادہ تھی کہنے لگے کہ جب میں نے علامہ اقبال ٹاؤن کی ایگزیمشن کے لئے درخواست دی تھی جب میں 30سال کا ایک نوجوان آدمی تھا اور اب میں بوڑھا ہو گیا ہوں اور ابھی تک پلاٹ سے محروم ہوں ان کے علاوہ اور بھی بہت سے لوگ تھے جن کو ابھی تک ان کی زمین کے بدلے ملنے والا پلاٹ نہیں ملا اس والے سے جب ایل ڈی اے افسران سے بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ پرانی سکیموں میں ہمارے پاس پلاٹ موجود نہیں ہیں جن میں گلبرگ گارڈن ٹاؤن فیصل ٹاؤن گلشن راوی سکیم اورعلامہ اقبال ٹاؤن سکیم شامل ہیں جبکہ جوہر ٹاؤن سکیم سبزازار سکیم اور موہلنوال سکیم میں پچھلے 4سالوں سے ایگزیشن بند ہے یعنی نئے پلاٹوں کی ایلوکیشن نہیں ہو رہی ہے جب اس سے پابندی اٹھے گی تو ان سکیموں کے مالکان اراضی کو نئے پلاٹوں ایلوکیشن کر دی جائے گیان سکیموں میں ہمارے پاس پلاٹ موجود ہیں جب ان سے پوچھا گیا کہ کب تک ایلوکیشن پر پابندی ختم ہو جائے گی تو انہوں نے کہا کہ اس بارے ہم کچھ نہیں بتا سکتے کہ یہ پابندی کب کھلے گی

مزید : میٹروپولیٹن 1