تین افراد کے قتل کے مقدمہ میں مجرم کے 23سال بعد ڈیتھ وارنٹ جاری

تین افراد کے قتل کے مقدمہ میں مجرم کے 23سال بعد ڈیتھ وارنٹ جاری

لاہور(نامہ نگار)سیشن جج نذیر احمد گجانہ نے تین افراد کے قتل کے مقدمہ میں ملوث مجرم غلام مصطفیٰ کے 23سال بعد ڈیتھ وارنٹ جاری کر دیئے مجرم کو27فروری کو پھا نسی دی جائے گی۔مجرم غلام مصطفی کو 1993ء میں انسداد دہشت گردی کی عدالت کے سپیشل جج، جسٹس گل بار خان نے تین افراد صبیحہ بی بی اور اس کے دو بیٹوں عامر اور عاطف کو قتل کرنے کے جرم میں سزائے موت کی سزا سنا ئی تھی۔

سزا کے بعد مجرم کو سا ہیوال جیل منتقل کر دیا گیا جہاں پر وہ اب تک قید تھا۔ مجرم نے اعلیٰ عدالتوں میں اپیلیں کیں جو خارج ہو گئیں۔ عدالت میں سا ہیوال جیل کے سپرنٹنڈنٹ نے پھانسی کی تاریخ مقرر کرنے کیلئے سیشن جج کواستدعا کی جس پر سیشن جج نے اس کے بلیک وارنٹ جاری کردیئے ہیں۔مجرم کے خلاف تھا نہ گلشن راوی پولیس نے 1992ء میں مقدمہ درج کیا تھاجبکہ مجرم کو1993ء میں پھانسی کی سزا ہوئی اوراب مجرم کو 23سال بعد پھانسی دی جا رہی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4