نیب پنجاب میں کرپٹ افراد کے خلاف کارروائی تیز کرے: خورشید شاہ

نیب پنجاب میں کرپٹ افراد کے خلاف کارروائی تیز کرے: خورشید شاہ

اسلام آباد (آن لائن) اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے کہا کہ نیب صوبہ پنجاب میں کرپٹ افراد کے خلاف کارروائی تیز کرے جبکہ نیب کی انکوائری قوانین میں بہتری لانے کیلئے پارلیمنٹ اپنا کردار ادا کرے‘ وزیراعظم کو نیب کے خلاف بیان سیاسی ورکروں کے اجلاس میں دینے کی بجائے پارلیمنٹ کے فورم پر دینا چاہیے تھا۔ پارلیمنٹ ہاؤس میں میڈیا کے ساتھ رسمی گفتگو کرتے ہوئے سید خورشید شاہ نے کہا کہ وزیراعظم کن اقدامات سے خوف ذدہ ہیں ان کی تحقیقات ہونی چاہئیں۔ ہماری بھی خواہش ہے کہ ملک سے کرپشن کا خاتمہ ہو۔ لیکن احتساب مساوی بنیادوں پر ہونا چاہیے۔ جب احتسابی عمل سندھ کے پی کے اور بلوچستان میں جاری تھا تو پنجاب کے حکمران خوشیاں منا رہے تھے اب پنجاب میں احتسابی عمل کا آغاز ہوا ہے تو پنجاب اشرافیہ کی چیخیں نکل رہی ہیں سید خورشید شاہ نے کہا کہ پنجاب کے صوبائی وزیر بھی نیب کو کرپٹ افراد کے خالف ایکشن لینے پر دھمکیاں دے رہے ہیں ۔ ماضی میں ہماری جماعت پر الزامات لگائے جارہیتھے تو خاموش تھے اب بول رہے ہیں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نیب قوانین میں ترامیم ہونی چاہئیں نیب کو انکوائری کے بعد گرفتاری کا اختیار ملنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے خود اقرار کیا ہے کہ وہ کمزور وزیراعظم ہیں عوام نے مینڈیٹ وزیراعظم کو دیا ہے یہ مینڈیٹ کسی کو چھیننے نہیں دیں گے۔ وزیراعظم کو کیا اشارے ملے ہیں جس سے خوفزدہ ہیں اس کی بھی تحقیقات ہونی چاہئیں ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں بھی بے گناہ افراد کی گرفتاری پر ہم احتجاج کریں گے ۔ وزیراعظم نے ماضی سے سبق حاصل نہیں کیا۔ وزیراعظم کو پارلیمنٹ کو عزت دے کر خود پارلیمنٹ میں آنا چاہیے

مزید : صفحہ اول