یو ایس ایڈ خیبر ایجنسی سے نقل مکانی کرنیوالوں کو کاشتکاری کے شعبے میں تعاون فراہم کریگا

یو ایس ایڈ خیبر ایجنسی سے نقل مکانی کرنیوالوں کو کاشتکاری کے شعبے میں تعاون ...

اسلام آباد(فیصل بن نصیر)اقوام متحدہ کا ادارہ برائے خوراک و زراعت(ایف اے او) اٹھاسی کروڑ روپے کی رقم گندم کی فصل کی بہتری، سبزیاں اگانے اور دیگر زرعی اجناس کی کاشت اور لائیو سٹاک کی صنعت کے لئے خیبر ایجنسی اور جنوبی وزیرستان سے نقل مکانی کر کے واپس جانے والے اکیس ہزار سے زائد خاندانوں کو امریکی ایجنسی برائے انٹرنیشنل ڈویلپمنٹ (یو ایس ایڈ ) کے تعاون سے فراہم کرئے گا، اس امداد کا مقصد کسان کو خوشحال بنا کر خوراک کے مسائل کو حل کرنے میں مدد دینا ہے ،اقوامِ متحدہ کے ادارہ ایف ائے او کے کنٹری ہیڈ پاکستان پیٹرک ٹی ایوانز نے روزنامہ پاکستان سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ یہ اہم سنگ میل ہے جو یو ایس ایڈ کی باہمی کوششوں سے دسمبر2016ء تک مکمل کر لیا جائے گا تاکہ جنگ زدہ علاقوں میں پچپن ہزار متاثرہ خاندانوں کے چار لاکھ سے زائد افراد کو لائیو سٹاک اور خوارک و زراعت کے مسائل کو حل کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی معاشی حالت کو بہتر بنانے میں مدد کی جاسکے۔انہوں نے بتایا کہ اس پروگرام کا مقصد جنگ سے متاثرہ علاقوں میں ربیع اور خریف کی فصلوں کے لئے معاونت، پھلوں کی نرسریوں کے قیام کے لئے اقدامات اور پانی کی بحالی کے لئے انتظام او انصرام سمیت جانوروں کے لئے ویکسینیشن کے مراحل اور چارے اور فوڈ سپلیمینٹ کی بروقت ضرورت کو پورا کرنے اورہزاروں کسانوں کو زرعی سہولیات پہنچانے سمیت معاونین کے لئے ٹریننگ پروگرامز کے انعقاد سے مقامی کسانوں کو ایک بار پھر عام زندگی میں لانا ہے تاکہ کسان معاشی طور پر مضبوط ہو کر اپنے خاندان کا بوجھ اٹھا سکیں۔اقوام متحدہ کے ادراہ برائے خوراک و زراعت (ایف ائے او) کے کمیونیکیشن کنسلٹننٹ ورگینجا مارگن نے پروگرام کے حوالے سے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ رواں سال یہ پروگرام شمالی وزیرستان اور دیگر فاٹا علاقوں کے کسانوں کو بھی مدد فراہم کرئے گا تاکہ لائیو سٹاک کی مدد میں جانور پال کر کسان کو روز مرہ زندگی گزارنے کے قابل بنایا جا سکے، جبکہ پھلوں ، سبزیوں اور دیگر بیج فراہم کر کے انہیں کھیتی باڑی کے قابل بنا نا ہے ، کیونکہ معاشی طور پر مضبوط ہونے سے ہی دہشت گردی سے متاثرہ ان علاقوں کے عوام کو دوبارہ عام زندگی میں لانے کے قابل بنایا جا سکتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر