حکومت شعبہ تعلیم میں برٹش کونسل سمیت تمام تنظیموں کی کوششوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے ، محمد عاطف

حکومت شعبہ تعلیم میں برٹش کونسل سمیت تمام تنظیموں کی کوششوں کو قدر کی نگاہ ...

 پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا کے وزیر ابتدائی و ثانوی تعلیم محمد عاطف خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت سرکاری سکولوں ، ان کے اساتذ ہ اور طلباء کی کارکردگے چانچنے کے لئے بین الاقوامی معیار کا سکولز،ٹیچرز اینڈ سٹوڈنٹس اسسمنٹ سسٹم لارہا ہے جس سے سکولوں کے معیار تعلیم میں واضح تبدیلی آئے گی او ر ان سکولوں پر عوام کا اعتماد بڑھے گا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں برٹش کونسل کی صوبائی حکومت کے ساتھ شعبہ تعلیم میں اشتراک کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کے دوران کیا۔اس موقع پر دوسروں کے علاوہ سیکرٹری تعلیم افضل لطیف ا ور ایڈیشنل سیکرٹری تعلیم قیصر عالم بھی موجود تھے۔برٹش کونسل کی جانب سے بریفنگ دیتے ہوئے فائزہ نے بتایا کہ برٹش کونسل خیبر پختونخوا میں تعلیم کے شعبے میں موجودہ حکومت کی کوششوں میں اپنا کردار ادا کرنے کا خواہاں ہے اور چاہتا ہے کہ اس سلسلے میں حکومت خیبر پختونخوا کے ساتھ مفاہمتی یادداشت پر باقاعدہ دستخط کئے جائیں۔وزیر تعلیم نے برٹش کونسل کی تعلیم کے فروغ کے لئے کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت شعبہ تعلیم میں برٹش کونسل سمیت تمام سرکاری و غیر سرکاری تنظیموں کی کوششوں کو قد ر کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور ہماری دلی خواہش ہے کہ صوبے کے عوام کی وسیع ترمفاد میں ان سے بھر پور استفادہ کیا جائے۔عاطف خان نے کہا کہ صوبے میں سکول نہ جانے والے بچوں کا مسئلہ انتہائی تشویشناک ہے لہذا سکول سے باہر ہر بچے کو سکول لانا ان کا مشن ہے جسے وہ ہر صورت پورا کرنے کی انتھک کوششیں کر رہے ہیں اور اس کے لئے میڈیا سمیت ہر سطح پر خصوصی مہم بھی چلائے جا رہے ہیں اس کے ساتھ ساتھ سکول نہ جانے والے بچوں کے اصل تعداد کا بھی تعین کیا جارہا ہے۔وزیر موصوف نے کہا کہ سرکاری سکولوں میں عالمی معیار کے مطابق بہتری لانے کے لئے دنیا کے ترقیافتہ ممالک کے تعلیمی ماڈلز سٹڈی کر رہے ہیں اور ان کا حالیہ دورہ سکاٹ لینڈ بھی اس سلسلے کی اہم کڑی ہے۔اسی طرح حکومت سکولز رینکنگ سسٹم متعارف کرانے کے لئے سالانہ انسپکشن شروع کررہی ہے جس کے تحت سکولوں میں نہ صرف اساتذہ کی حاضری اور کارکردگی کو جانچا جائے گا بلکہ سکول اور اس کے بچوں کی ہر پہلو کا باریک بینی سے جائزہ لیا جائے گا او ر اس کی روشنی میں سکولوں کی باقاعدہ گریڈنگ کی جائے گی۔

مزید : پشاورصفحہ اول