قتل کیس کی انکوائری کیلئے ڈی ایس پی صدر کاظم نقوی انکوائری افسر مقرر

قتل کیس کی انکوائری کیلئے ڈی ایس پی صدر کاظم نقوی انکوائری افسر مقرر

چکوال(ڈسٹرکٹ رپورٹر) ڈی پی او منیر مسعود مارتھ نے قصبہ چوہان تھانہ ڈھڈیال قتل کیس کی انکوائری کیلئے ڈی ایس پی صدر کاظم نقوی کو انکوائری افسر مقرر کر دیا اور ڈی ایس پی صدر سرکل نے فریقین کو 19فروری کو انکوائری کیلئے اپنے دفتر میں طلب کر لیا ہے۔ قصبہ چوہان تھانہ ڈھڈیال کے علاقے میں اڑھائی مہینے قبل قتل ہونے نوجوان کے قاتل ابھی تک گرفتار نہیں ہوئے اور ڈھڈیال پولیس نے قاتل ملزمان کے ساتھ مک مکا کر لیا ہے۔ غلام مصطفی ولد غلام حسن ساکن ڈھوک شاہو تھانہ جاتلی نے تھانہ ڈھڈیال میں ایف آئی آر بھی درج کرائی ہے جس میں بتایا گیا کہ قصبہ چوہان میں مرغی خانہ حاجی محمد نذیر اور اس کے بیٹے قاسم شہزاد کی ملکیت ہے اوراس کا 21سالہ بیٹاعدنان حسن 9روز قبل ہی اس کے مرغی خانے پر ملازم ہوا تھا ،حاجی محمد نذیر اور قاسم شہزاد نے وقوعہ کے روز الزام لگایا کہ عدنان حسن کے پاس اس کے گاؤں سے جو دو مہمان آئے تھے وہ اس کا پستول چوری کر کے لے گئے ہیں۔ حاجی محمد نذیر مقتول عدنان کے والد غلام مصطفی کو دھمکیاں دیتا رہا کہ وہ فوری طور پر آئے ورنہ اس کا پچھتانا پڑے گا اور پھر دو گھنٹے کے بعد ٹیلی فون پر بتایا کہ عدنان حسن نے خود کشی کر لی ہے۔ غلام مصطفی نے روتے ہوئے بتایا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بھی تصدیق ہوگئی ہے کے گلا گھونٹ کر اس کے بیٹے عدنان کو قتل کیا گیا ہے۔ غلام مصطفی نے بتایا کہ ڈھڈیال پولیس نے انہیں فٹ بال بنا رکھا ہے اور ملزمان دندناتے پھر رہے ہیں اور خطرناک نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر