حکومت کی ترجیح شہریوں کی زندگیوں اورعزتوں کی حفاظت کی بجائے پل اور ٹرین منصوبے بنانارہ گیا ہے ،ہائی کورٹ کے ریمارکس

حکومت کی ترجیح شہریوں کی زندگیوں اورعزتوں کی حفاظت کی بجائے پل اور ٹرین ...
 حکومت کی ترجیح شہریوں کی زندگیوں اورعزتوں کی حفاظت کی بجائے پل اور ٹرین منصوبے بنانارہ گیا ہے ،ہائی کورٹ کے ریمارکس

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی ) لاہورہائیکورٹ کے جسٹس سیدمظاہرعلی اکبرنقوی نے قرار دیا ہے کہ لگتا ہے حکومت کی ترجیح شہریوں کے جان ومال اوران کی عزت و آبروکی حفاظت کی بجائے صرف پل اوراورنج ٹرین لائن منصوبے بنانا رہ گیا ہے۔فاضل جج نے یہ ریمارکس مقصوداں بی بی کی درخواست کی سماعت کے دوران دیئے ،درخواست گزار خاتون کی طرف سے موقف اختیارکیاگیا کہ اس کی بیٹی لائبہ کوشالیمارکے علاقہ سے ملزمان،مظہر نے اپنے ساتھیوں خے ہمراہ اغوا ءکیا۔اغواکامقدمہ 10ستمبر2015ءکوتھانہ شالیمارمیں درج کروایاگیا،پولیس نے ملزمان کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے ملزموں کوبے گناہ قراردے کر مقدمہ سے خارج کردیا۔ عدالت میں لڑکی نے بیان دیاکہ اسے نہیں معلوم کہ پولیس نے اس کابیان کہاں اورکیسے کروایا، تفتیشی افسرکی جانب سے تسلی بخش جواب نہ دینے پرعدالت نے فوری طورپر ایس ایس پی انویسٹی گیشن حسن مشتاق سکھیرا کوطلب کیا۔عدالت نے ایس ایس پی انویسٹی گیشن کی اچھی شہرت کی تعریف کرتے ہوئے انہیںحکم دیاکہ وہ اپنی نگرانی میں ناقص تفتیش کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کرکے 5روزمیں رپورٹ پیش کریں۔عدالت نے لڑکی کو دارالامان بھجواتے ہوئے اس سے والدین کے علاوہ کسی اورسے ملاقات پرپابندی بھی عائدکردی ہے، عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ کہ بدقسمتی ہے کہ کم عمربچیوں کی عزتیں لوٹی جارہی ہیں لیکن حکومت کی ترجیح شہریوں کے جان ومال اورعزت و آبروکی حفاظت کے بجائے صرف پلیں اوراورنج ٹرین لائن منصوبے بنانارہ گیاہے۔

مزید : لاہور