چڑیا گھر میں ایجوکیشن کمپلیکس اور ریکارڈ روم قائم کرنے کی منظوری

چڑیا گھر میں ایجوکیشن کمپلیکس اور ریکارڈ روم قائم کرنے کی منظوری

لاہور( لیڈی رپورٹر)لاہور چڑیا گھر کی مینجمنٹ کمیٹی نے چڑ یا گھر میں ایجوکیشن کمپلیکس ، انکوبیشن روم ، ریکارڈ روم کے قیام کی منظوری دے دی ہے۔ دفتر کے استعمال کے لیے لیپ ٹاپس،چڑیا گھر کے ملازمین کے لیے سیل فون کریڈٹ کی سہولت فراہم کرنے اور شائقین کو جانوروں کی معلومات فراہم کرنے کے لیے LEDs کی تنصیب کی منظوری بھی دے دی گئی۔اس امر کا فیصلہ ڈائریکٹر جنرل جنگلی حیات و پارکس پنجاب کی زیر صدارت منعقدہ کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا جس میں ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھر حسن علی سکھیرا ، یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینمل سائنسز ، Pet Centre کے انچارج ڈاکٹر عاصم خالد ، روہین رفیق، اکبر بھٹی ، ڈاکٹر سید عباس شاہ ، ڈپٹی سیکر ٹری وائلڈلائف اور ڈاکٹر عبد العلیم چوہدری نے شرکت کی۔ اجلاس میں حسن علی سکھیرا ، ڈائریکٹر چڑیا گھر نے بتایا کہ چڑیا گھر میں آنے والے کثیر تعداد طلباء کو جنگلی حیات کی بہترآگاہی فراہم کرنے کے لیے ایجوکیشن کمپلیکس کا قیام ناگزیر ہے اور اسکی تعمیر پر 54لاکھ کی لاگت آئے گی جبکہ جنریٹر روم ، ریکارڈ روم اور انکوبیشن روم پر 37لاکھ کی لاگت آئے گی جس پر کمیٹی کے اراکین نے متفقہ طور پر اس منصوبے کو عملی جامہ بنانے کی منظوری دیدی ۔چڑیا گھر کے ملازمین کے سروس رولز کی منظوری کیلیے organogramکی تشکیل کو زیر بحث لایا گیا اور اگلی میٹنگ میں سروس رولز پیش کرنے کی ہدایت کی گئی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1