وزارت مذہبی امور میں 5کامیاب حج آپریشن کرانیوالے 29سے زائد اہلکاروں کے تبادلے

وزارت مذہبی امور میں 5کامیاب حج آپریشن کرانیوالے 29سے زائد اہلکاروں کے تبادلے

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)وزارت مذہبی امور میں 5کامیاب حج آپریشن کرانے والے 29سے زائد اہلکاروں کے بلا وجہ تبادلے کے بعد نا تجربہ کار دوسرے شعبوں سے آنے والوں کی اجارہ داری قائم،پرائیویٹ حج سکیم کے انچارج سیکشن آفیسر سے کام لینے کی بجائے اسٹیبلیشمنٹ ڈویژن سے آئے ہوئے سپرینڈنٹ کو سیکشن آفیسر کی ذمہ داری دے کر نئی اور پرانی کمپنیوں کی سکیورٹنی کا انچارج بنا دیا گیا ہے جس سے سینئر افسروں میں بردلی پھیلی ہوئی ہے پیپلز پارٹی کے دور کے حج سکینڈل کے بعد وزارت مذہبی امور کو اپنی ایمانداری اور محنت سے پٹڑی پر چڑھانے والے اہلکاروں کا موقف ہے کہ تبادلے کرنا غلط بات نہیں ہے دن رات ایک کر کے سسٹم جو بنایا گیا ہے اس کو ڈی ریل نہیں ہونا چاہیے ،وزارت مذہبی امور نے بدنامی کا داغ بڑی مشکل سے دھویا ہے ،نا تجربہ کار اہلکاروں سے حج اپریشن کا مشکل کام لینا بڑی سمجھداری کی ضرورت ہے ،وزارت میں زیادہ عملہ ایک دوسرے کا تماشا دیکھنے میں مصروف ہے ،ایچ جی او سیکشن کا انچارج سیکشن آفیسر حج آرگنائزر سکیم سے لا علم ہے ،حج پالیسی کا انچارج اپنے سیکشن کی ذمہ داری سے لا علم ہے پھر کام کون سی قوتیں کر رہی ہیں ہر عمل مشکوک ہوتا جا رہا ہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...