اسامہ اپنے بچوں کو پاکستانی اور افغان زبانیں سکھانا چاہتے تھے،عرب صحافی

اسامہ اپنے بچوں کو پاکستانی اور افغان زبانیں سکھانا چاہتے تھے،عرب صحافی

دبئی(این این آئی)عرب ٹی وی کی خاتون صحافی نے کہاہے کہ القاعدہ کے بانی لیڈر اسامہ بن لادن اپنے بچوں کو پاکستانی اورافغان زبانیں سکھانا چاہتے تھے،عرب ٹی وی سے گفتگومیں ہدیٰ الصالح نے کہاکہ بن لادن کی پانچ بیگمات میں سے ان کے 30 بچے بچیاں ہوئیں۔ بن لادن خاندان کے طرز زندگی میں سادگی کا عنصر نمایاں تھا۔ ان کے گھروں میں ایئرکنڈیشنر نہیں تھے۔ اس کا مقصد بن لادن کے بچوں کو مشکلات کا عادی کرنا تھا۔ سعودی عرب، سوڈان ، افغانستان کے تورا بورا اور ایبٹ آباد میں قیام کے دوران ان کے خاندان کو شدید معاشی اور طبی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ بروقت علاج نہ ملنے کے باعث ان کے کئی بچے فوت ہو گئے اور ان کی بیگمات بھی بیمار ہوئیں۔ ان کی ایک اہلیہ کو بیٹی کو ڈاکٹر کودکھانے پر بھی شک تھا جس کی بنا پر بیٹی کو ڈاکٹر کو چیک نہیں کرایا گیا۔ھدیٰ کا کہنا تھا کہ بن لادن اپنے بچوں کو پاکستان اور افغانستان کے معاشروں میں مدغم کرنے کے خواہاں تھے، یہی وجہ ہے کہ انہوں نے بچوں کو پاکستان اور افغانستان میں بولی جانے والی زبانیں سکھانے میں دلچسپی رکھی ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...