سعودی حکومت کی طرف سے ٹیکسوں کی بھرمار، سرکاری حج سکیم کا پیکج مہنگا ہونے کا امکان

سعودی حکومت کی طرف سے ٹیکسوں کی بھرمار، سرکاری حج سکیم کا پیکج مہنگا ہونے کا ...

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)سرکاری حج سکیم کا پیکج نہ بڑھانا وزارت مذہبی امور کے گلے پڑ گیا ،سعودی حکومت کی طرف سے 5فیصد VAT،5فیصد مونسپلٹی ٹیکس ،100فیصد پٹرول مہنگا ہونے کے بعد ٹرانسپورٹ بھی مہنگی دستیاب ہو گی،مکتب نے سہولیات بڑھانے پر قیمت بڑھا دی ہے ،حکومت پاکستان کو اربوں روپے سبسڈی دینا پڑے گی،حاجیوں کو سبسڈی دی جا سکتی ہے یا نہیں نئی بحث شروع ہو گئی،انڈیا نے سرکاری حجاج کرام کو ٹکٹ پر دی جانے والی سبسڈی مرحلہ وار ختم کر دی ہے ،وزارت مذہبی امور حج2018ء کے سرکاری سکیم کے حجاج کو سبسڈی دینے پر مجبور ہو رہی ہے ،سعودی عرب میں ایک ریال والی پیپسی اڑھائی ریال کی ہو گئی ہے ،ایک ریال والی چائے تین ریال کی ہو گئی ہے ،پٹرول جو 80حلالہ کا لیٹر تھا ایک ریال40حلالہ کا ہو گیا ہے حکومت نے پوائنٹ سکورنگ کے لیے گزشتہ سال کا پیکج اس سال بر قرار رکھا ہے ،گزشتہ سال 40ہزار حاجیوں کو ٹرین کے ٹکٹ مل سکے تھے، اس کی وجہ مکتب ٹرین سٹیشن سے دور بنائے گئے ہیں اس سال بھی مکتب ٹرین سٹیشن کے قریب مہنگے مل رہے ہیں ،بسوں پر جانا ضروری ہے ،بسیں گزشتہ سال نہ ملنے کی وجہ سے سرکاری حج سکیم پر سوال اٹھے تھے ویسی روایت وزارت اس سال دوبارہ دھرا رہی ہے ،سنجیدہ حلقوں نے حکومت کو خبردار کیا ہے کہ اگر گزشتہ سال والی روش اختیار کی گئی تو سرکاری حاجی خوار ہو گا ،وزارت کے ذرائع کا کہنا ہے ہمیں جو کہا جا رہا ہے وہ ہم کر رہے ہیں ،دوسری طرف کہا جا رہا ہے کہ اس سال حج پالیسی موجودہ حکومت نے دی ہے عمل درآمد نئی حکومت کرے گی اس لیے ان کو فکر نہیں ہے ۔

مزید : صفحہ آخر