چیف جسٹس کے حکم پر شرجیل میمن ہسپتال سے جیل منتقل

چیف جسٹس کے حکم پر شرجیل میمن ہسپتال سے جیل منتقل
چیف جسٹس کے حکم پر شرجیل میمن ہسپتال سے جیل منتقل

  


 کرا چی (مانیٹرنگ ڈیسک )چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کے حکم پر پیپلز پارٹی کے رہنما شرجیل انعام میمن کو اسپتال سے جیل منتقل کر دیا گیا۔چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں شرجیل میمن کو جیل سے اسپتال منتقل کرنے سے متعلق نوٹس کی سماعت کی۔آئی جی جیل خانہ جات نصرت منگن نے عدالت کو بتایا کہ سندھ ہائی کورٹ نے ضمانت مسترد کی تھی جس پر 24 اکتوبر 2017 کو شرجیل میمن کو جیل بھیجا گیا اور پھر ڈاکڑز کی سفارش پر انہیں اسپتال منتقل کیا گیا۔چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا 2 دن بعد ہی شرجیل کو جیل سے اسپتال منتقل کر دیا گیا جس پر انہوں نے کہا کہ نیب کورٹ نے میڈیکل بورڈ بنانے کی ہدایت دی تھی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ نیب کورٹ نے صرف ٹیسٹ کرانے کا کہا تھا لیکن آپ کو کس نے اسپتال بھیجنے کی اتھارٹی دی اور کہاں لکھا ہے کہ اسپتال منتقل کریں؟ شرجیل میمن کو کسی عدالت نے اسپتال بھیجنے کا نہیں کہا اور یہ خود ساختہ رپورٹس ہیں اسی لیے شرجیل میمن کو آج ہی جیل بھیجا جائے۔ ہم دیکھیں گے کہ شرجیل میمن کے کیس کو کس طرح سے پنجاب منتقل کر دیں جس پر وکیل درخواست گزار بیرسٹر فیصل صدیقی نے مؤقف اختیار کیا کہ سپریم کورٹ کے پاس اختیار موجود ہے اور قانون بھی موجود ہے۔سپریم کورٹ کے حکم کے بعد آئی جی جیل خانہ جات سپریم کورٹ کراچی رجسٹری سے چلے گئے اور تھوڑی دیر میں عدالت واپس پہنچے جہاں انہوں نے عمل درآمد رپورٹ جمع کرائی۔نصرت منگن نے بتایا کہ شرجیل میمن کو از خود جیل منتقل کیا اور میں عمل درآمد رپورٹ لایا ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ جیل میں شرجیل کو کہاں رکھا جائے گا، اس حوالے سے جیلر ہی بتائے گا۔صحافیوں کے ڈاکڑز کی جانب سے شرجیل میمن کو جیل منتقل کرنے کی اجازت سے متعلق سوال پر آئی جی نصرت منگن نے کہا کہ ڈاکٹرز اور میں نے عدالتی حکم پر عمل کیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...