پولیس نے موسی خان کو اہلخانہ سمیت منشیات فروش قرار دے دیا

پولیس نے موسی خان کو اہلخانہ سمیت منشیات فروش قرار دے دیا

کراچی(کرائم رپورٹر)سائٹ سپر ہائی وے سے ملنے والی موسی خان کی لاش کا معاملہ ،پولیس نے موسی خان کو اہلخانہ سمیت منشیات فروش قرار دے دیا۔ مقتول موسی اور اس کے باپ ماں اور بھائی کے خلاف مقدمات درج تھے۔تفصیلات کے مطابق مبینہ ماورائے عدالت قتل ہونیوالے موسی خان اور اس کے گھر کے تمام افرادمنشیات کی خریدوفروخت میں ملوث ہیں ،پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ موسی خان کاباپ جلات اورماں شہریناسمیت تین بیٹوں کے خلاف بھی مختلف تھانوں میں ہیروئن ،آئس اورچرس سمیت منشیات فروشی کے9سے زائد مقدمات درج ہیں،مقدمات گذاپ ،سہراب گوٹھ ،سائٹ سپرہائی وے ،سمن آباداورگلشن معمار تھانوں میں درج ہیں،ہلاک ہونے والا موسی خان افغان بستی کوچی کیمپ کے رہائشی اور منشیات کا اڈا چلاتا تھا،جبکہ موسی خان کی ہلاکت کا مقدمہ گڈاپ تھانے میں والد کی مدعیت میں درج ہے،واضح رہے کہ موسی اور عیسی کو سادہ لباس اہلکاروں نے گھر سے حراست میں لیا تھا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /راولپنڈی صفحہ آخر /کراچی صفحہ اول


loading...