جوڈیشری کو ہروقت نشانے پر رکھنے والے نواز شریف نے لودھراں جلسے میں عدلیہ پر تنقید کیوں نہیں کی ؟ حامد میر نے اندر کی بات بتادی

جوڈیشری کو ہروقت نشانے پر رکھنے والے نواز شریف نے لودھراں جلسے میں عدلیہ پر ...
جوڈیشری کو ہروقت نشانے پر رکھنے والے نواز شریف نے لودھراں جلسے میں عدلیہ پر تنقید کیوں نہیں کی ؟ حامد میر نے اندر کی بات بتادی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و اینکر پرسن حامد میر کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے شہباز شریف کی وجہ سے لودھراں جلسے میں عدلیہ پر زیادہ تنقید نہیں کی۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے حامد میر کا کہنا تھا کہ لودھراں جلسہ کوئی بہت بڑا اجتماع نہیں تھا کیونکہ یہ صرف 2 دن کے نوٹس پر کیا گیا تھا جس میں 5 سے 6 ہزار افراد نے شرکت کی۔ حامد میر نے کہا کہ لودھراں الیکشن میں فتح کے بعد شہباز شریف، حمزہ شہباز اور عبدالرحمان کانجو نے بہت بڑا جلسہ کرنے کا پروگرام بنایا تھا لیکن نواز شریف کی وجہ سے جلسہ بڑا نہیں ہوپایا کیونکہ نواز شریف لوگوں کو یہ دکھانا چاہتے تھے کہ یہ کامیابی ان کی وجہ سے ملی ہے۔

حامد میر نے کہا کہ نواز شریف کی عدلیہ پر ممکنہ تنقید کے باعث شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے جان چھڑانے کی کوشش کی لیکن انہوں نے دونوں کو خود فون کیا اور انہیں ساتھ لے کر جلسے میں گئے۔ نواز شریف کے فون پر شہباز شریف کو خطرہ لاحق ہوگیا کہ کہیں جلسے میں ان کاطلال چوہدری کی طرح ہاتھ کھڑا کرکے یہ نہ کہہ دیا جائے کہ دیکھو یہ بھی کہتا ہے کہ جو سپریم کورٹ نے فیصلہ کیا ہے وہ ٹھیک نہیں کیا تو میں کدھر جاﺅں گا، ہوسکتا ہے کہ شہباز شریف کی درخواست پر ہی نواز شریف نے عدلیہ پر تنقید نہ کی ہو۔

مزید : سیاست /علاقائی /اسلام آباد