” میں عمارت کی لفٹ میں گئی تو پاکستانی نوجوان زبردستی ساتھ گھس آیا، اس نے اندر آتے ہی اپنی پتلون۔۔۔ “عرب ملک کی عدالت میں غیرملکی خاتون نے شرمناک ترین بات بیان کردی

” میں عمارت کی لفٹ میں گئی تو پاکستانی نوجوان زبردستی ساتھ گھس آیا، اس نے ...
” میں عمارت کی لفٹ میں گئی تو پاکستانی نوجوان زبردستی ساتھ گھس آیا، اس نے اندر آتے ہی اپنی پتلون۔۔۔ “عرب ملک کی عدالت میں غیرملکی خاتون نے شرمناک ترین بات بیان کردی

  

دبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) عرب ممالک میں عمومی طورپر پاکستانیوں سمیت ایشیائی ممالک میں محنت مزدوری کرتے ہیں لیکن بعض اوقات کچھ ناعاقبت اندیش ایسی حرکات کر بیٹھتے ہیں جس سے نہ صرف خود مصیبت میں پھنس جاتے ہیں بلکہ ملک و قوم کا نام بھی بدنام کرنے کا سبب بنتے ہیں، ایسا ہی کچھ پاکستانی ڈرائیور نے کیا اور اسے لفٹ میں خاتون کیساتھ بدفعلی کے الزام میں حراست میں لے کر عدالت میں پیش کردیا گیا۔

گلف نیوزکے مطابق ایک ڈرائیور خاتون کے پیچھے اس عمارت کی لفٹ میں پہنچ گیا جہاں وہ رہتی تھی اور بدفعلی کا نشانہ بنا ڈالا۔ عدالت کو بتایاگیاکہ تیونسی خاتون ابھی اپنے کام سے واپس آکر اپنی عمارت کی لفٹ کی طرف بڑھ رہی تھی جب اس کی نظرایک24سالہ پاکستانی ڈرائیور پر پڑی جو شیشے کے دروازے کے دوسری طرف کھڑا تھا، مرد چونکہ سیکیورٹی گارڈ کے لباس میں ملبوس تھا، اسی لیے خاتون نے اس کیلئے دروازہ کھول دیااور بتایاکہ آگے جائیں اور دوسری لفٹ استعمال کریں کیونکہ وہ کسی اجنبی کیساتھ عمارت کی لفٹ میں نہیں جاسکتی ۔

خاتون کے اس موقف کے بعد پاکستانی نے ایسا تاثر دیا جیسے وہ باہر انتظار کررہاہے لیکن جیسے ہی خاتون نے لفٹ میں قدم رکھااور مطلوبہ منزل کے فلور کابٹن دبایاتو لفٹ کا دروازہ بند ہونے سے پہلے جلدی سے 24سالہ نوجوان بھی لفٹ میں گھس آیا۔

عدالتی ریکارڈ کے مطابق لفٹ اوپر اٹھناشروع ہوگئی اور مرد خاتون کے قریب آیا ، اپنی پتلون اتاری اور ایک ہاتھ پتلون میں رکھتے ہوئے دوسرے ہاتھ سے خاتون کو زور سے دبوچ لیا۔ خاتون چلائی اور مدد مانگی تو جیسے ہی لفٹ رکی تو وہ شخص وہاں سے بھاگ کھڑا ہواجس کی شکایت خاتون نے پولیس کو کردی جس پر ملزم کو حراست میں لے لیاگیا۔

دبئی کی عدالت میں ملزم قراردیئے گئے پاکستانی نے الزام کی تردید کرتے ہوئے کہاکہ ” میں بے گناہ ہوں “۔

خاتون نے بتایاکہ ان کی عمارت میں کسی اجنبی کا داخلہ ممنوع ہے ، اس لیے اس کے پاس بھی مخصوص کارڈ تھا لیکن سیکیورٹی گارڈ کے لباس کی وجہ سے اس نے لفٹ کا دروازہ کھول دیا، پہلی نظر میں مجھے یہی محسوس ہوا کہ یہ کوئی نیا سیکیورٹی گارڈ ہے کیونکہ اس نے مجھے لفٹ میں پہلے داخل ہونے کی دعوت دی اور کہاکہ مجھے آپ کی مدد کی ضرورت ہے تو مجھے لگا کہ شاید پیسے مانگ رہا ہے ، میں نے بتایاکہ میرے پاس نقدی نہیں ہے تو وہ میرے قریب آگیا اورپھر۔ ۔ ۔۔“

رپورٹ کے مطابق پراسیکیوشن ریکارڈ کا کہناہے کہ تفتیش کے دوران ملزم نے تیونسی خاتون کے ساتھ قبیہ حرکت کا اعتراف کیا جبکہ اس کیس کا فیصلہ 26فروری کو سنایاجائے گا۔

مزید : عرب دنیا