حکومت نے قرضے لینے کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا،ملکی قرضے 268کھرب روپے کی بلند سطح پر پہنچ گئے:مہرین انور راجہ

حکومت نے قرضے لینے کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا،ملکی قرضے 268کھرب روپے کی بلند ...
حکومت نے قرضے لینے کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا،ملکی قرضے 268کھرب روپے کی بلند سطح پر پہنچ گئے:مہرین انور راجہ

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کی سینئر رہنما مہرین انور راجہ نے کہا ہے کہملکی قرضے 268کھرب روپے کی بلند سطح پر پہنچ گئے ہیں، چار سالوں میں قرضوں میں47فیصد اضافہ ہوا دوسری سہ ماہی میں 991ارب روپے کے قرضے لئے گئے ،مسلم لیگ ن کی حکومت نےایک سال میں 34کھر ب روپے کے قرضے لئے گئے۔

تفصیلات کے مطابق مہرین انور راجہ نے کہاکہ حکومت نے چار سالوں میں صرف قرضہ ہی لیا ہے اس کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا،عوام پوچھ رہے ہیں کہ قرضوں کی یہ رقم کہاں خرچ کی گئی؟اتنی بھاری تعداد میں قرضے لینے کے بعد بھی عوام کی زندگی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ،ا ن سے قرضوں سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچا ۔انہوں نے کہا کہاگر یہ قرضےعوام پر خرچ کئے جاتے تو عوام ان قرضوں پر تشویش کا اظہار نہ کرتے ،نہ جانے قرض کی یہ رقم کہاں خرچ ہوئی ہے ؟۔مہرین انور راجہ کا کہ کہنا تھا کہ قرضوں سے ملک معاشی طور پر تباہ ہوگیا ہے اور عوام کی معاشی مشکلات میں بھی اضافہ ہو اہے ،عوام کو ساڑھے چار سالوں میں روزگار مل سکا اور نہ ہی ان کو سستی اشیائےصرف دستیاب ہوسکی ہیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...