’’جب میں 8سال کی تھی تو چھٹیوں پر اس اجنبی سے ملی، آج اس نے اس ملاقات کا یہ شرمناک استعمال شروع کر دیا کہ ۔۔۔‘‘ نوجوان لڑکی کے ساتھ اجنبی نے انٹرنیٹ پر ایسا کام کر دیا کہ کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا

’’جب میں 8سال کی تھی تو چھٹیوں پر اس اجنبی سے ملی، آج اس نے اس ملاقات کا یہ ...
’’جب میں 8سال کی تھی تو چھٹیوں پر اس اجنبی سے ملی، آج اس نے اس ملاقات کا یہ شرمناک استعمال شروع کر دیا کہ ۔۔۔‘‘ نوجوان لڑکی کے ساتھ اجنبی نے انٹرنیٹ پر ایسا کام کر دیا کہ کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ایک برطانوی لڑکی 8سال کی عمر میں ایک اجنبی خاتون کو ملی اور اس کے 17سال بعد اب جا کر اس خاتون نے انٹرنیٹ پر اس لڑکی کے ساتھ ایسا کام کر دیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 25سالہ لل ہورسلے نامی یہ لڑکی آٹھ سال کی تھی جب وہ اپنے ماں باپ کے ساتھ چھٹیوں پر گئی جہاں اس کی ملاقات 46سالہ جولی ووڈ اوراس کے شوہر سٹیو سے ہوئی۔ جولی اور سٹیو بچی کے والدین کے ساتھ گفتگو کرتے رہے اور جب وہ بار میں چلے گئے تو وہ بچی کے ساتھ سوئمنگ پول میں کھیلتے بھی رہے۔

واپس جانے کے بعد جولی کبھی لل اور اس کے گھر والوں سے نہیں ملی تاہم وہ ہر سال اسے کرسمس کارڈ ضرور بھیجا کرتی تھی۔ چند سال قبل اسے فیس بک پر جولی کی فرینڈ ریکوئسٹ موصول ہوئی جو اس نے فوراً قبول کر لی۔ یہیں سے لل کی مشکلات کا آغاز ہو گیا۔ اس کے کچھ عرصہ بعد ہی کسی شخص نے لل کو فیس بک پر پیغام بھیجا کہ اس کی تصاویر ڈیٹنگ ویب سائٹس پر استعمال ہو رہی ہیں۔ جب لل نے دیکھا تو وہ دنگ رہ گئی کہ کسی جے نامی خاتون نے کئی ڈیٹنگ ویب سائٹس پر اس کی تصاویر لگا رہی تھیں اور ان کے ذریعے مردوں کو پھانس رہی تھی۔ جب لل نے اس کی پولیس کو رپورٹ کی تو اس کی تفتیش میں انکشاف ہوا کہ یہ جے نامی خاتون کوئی اور نہیں بلکہ وہی جولی تھی جو خود تو کافی عمر رسیدہ ہو گئی تھی چنانچہ اب وہ 25سالہ خوبصورت لل کی تصاویر استعمال کرکے مردوں کو لبھا رہی تھی۔

لل کا کہنا تھا کہ ’’اس واقعے پر میں دنگ رہ گئی۔ اس خاتون نے اتنے عرصے بعد میرے ساتھ وہ کیا جو میں سوچ بھی نہیں سکتی تھی۔ اس نے ان جعلی ڈیٹنگ پروفائلز میں لکھا رکھا تھا کہ میں پارٹی اینیمل ہوں، نئے نئے دوست بنانا پسند اور مردوں کے ساتھ گھومنا پسند کرتی ہوں۔ میں سگریٹ نوشی پسند نہیں کرتی جبکہ شراب بہت زیادہ پیتی ہوں۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...