’میری ماں کو مفت عمرہ کروانے والی خاتون نے ڈبے میں ہیروئن رکھ دی اورپھر۔۔۔‘ ایک پاکستانی کی ایسی داستاں جسے سن کر آپ بھی اشکبارہوجائیں گے

’میری ماں کو مفت عمرہ کروانے والی خاتون نے ڈبے میں ہیروئن رکھ دی اورپھر۔۔۔‘ ...
’میری ماں کو مفت عمرہ کروانے والی خاتون نے ڈبے میں ہیروئن رکھ دی اورپھر۔۔۔‘ ایک پاکستانی کی ایسی داستاں جسے سن کر آپ بھی اشکبارہوجائیں گے

  



نارووال(ڈیلی پاکستان)مفت عمرہ کروانے کی آڑ میں سعودی عرب منشیات کی سمگلنگ کی ایک گھناونی کوشش سامنے آئی ہے جس نے ایک معصوم اور غریب خاتون کو سعودی عرب کی جیل میں سڑنے پر مجبور کردیاہے۔جبکہ اصل ملزم آزاد فضاوں میں سانس لے رہے ہیں۔

یہ دردناک کہانی ہے نارووال کے قریب ایک گاو¿ں سے تعلق رکھنے والے محبوب عالم کی جس نے اپنی داستان بی بی سی کو سنائی ہے۔ وہ بتاتے ہیں کہ ان کی والدہ کو محلے کی ایک خاتون نے عمرے پر بھیجا تھا۔

محبوب عالم کے مطابق ’ہم اپنے علاقے کے چند گھروں میں دودھ بیچتے تھے۔ میری والدہ ایک گھر میں دودھ دینے جاتی تھیں۔ اس گھر میں رہنے والی خاتون نے میری والدہ سے کہا کہ جب میری والدہ فوت ہوئی تھی تو کچھ پیسے چھوڑ کر گئی تھیں۔ ہم نے اس دن سوچا تھا کہ ان پیسوں سے ہم کسی غریب کو عمرہ کروائیں گے اور اس نے میری والدہ سے کہا کہ میں آپ کو مفت عمرہ کراو¿ں گی۔ جس پر میری والدہ نے حامی بھر لی۔‘

محبوب عالم نے مزیدبتایا کہ ’اس عورت نے ہم سے کہا کہ کسی کو بتانا مت کہ یہ عمرہ میں کروا رہی ہوں کیونکہ میں یہ نیکی ضائع نہیں کرنا چاہتی۔‘’تاہم روانگی سے قبل وہ ہمارے گھر کچھ سامان لے کر آئیں اور کہا کہ میرے بہنوئی یہ سامان سعودی عرب میں آپ کی والدہ سے لے لیں گے۔ ‘محبوب عالم نے بتایا کہ انہوں نے اس سامان کی تلاشی لی جس میں کچھ کپڑے تھے۔’

محبوب کے مطابق جب ان کی والدہ سعودی عرب روانگی کیلئے سیالکوٹ انٹرنیشل ایئر پورٹ پہنچیں تو وہ عورت ملنے آئی اور ساتھ میں ایک حلوے کا ڈبہ بھی لائی کہ یہ بھی سامان میں رکھ لیں۔ میری والدہ کی فلائٹ کا ٹائم تھا۔ ہم نے وہ ڈبہ کھول کر دیکھا تو اس کے اندر حلوہ ہی تھا۔وہ بتاتے ہیں کہ ان کی والدہ عمرے کے لیے سعودی عرب چلی گئیں اور پھر ان سے رابطہ نہیں ہوا۔

محبوب اپنی درد بھری کہانی سناتے ہوئے بتاتے ہیں کہ’ہم نے ڈیڑھ ماہ بہت تکلیف میں گزارا کیونکہ ان کا کچھ پتا نہیں چل رہا تھا۔ کچھ عرصے بعد مجھے ایک کال موصول ہوئی، کسی خاتون نے پوچھا کہ جمیلہ بی بی آپ کی کیا لگتی ہیں؟ میں نے جواب دیا کہ وہ میری والدہ ہیں تو اس عورت نے میری والدہ سے میری بات کروائی۔‘محبوب کے مطابق ’میری والدہ نے بتایا کہ جب وہ جدہ پہنچی تو ایئرپورٹ پر حکام نے میرے سامان کی تلاشی لی تو اس ڈبے میں حلوے کے نیچے سے ہیروئین برآمد ہوئی۔ میں نے حکام کو بتایا کہ یہ سامان میرا نہیں ہے لیکن انہوں نے مجھے جیل بھیج دیا ہے۔‘

محبوب عالم کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے اس عورت (جس نے عمرے پر بھیجا تھا) کے خلاف محکمہ انسداد منشیات میں درخواست دی جس کے بعد کارروائی کی گئی اور انھیں گرفتار کر لیا گیا جبکہ ان کا بیٹا لاہور ایئرپورٹ پر پہلے ہی منشیات لے جاتے پکڑا جا چکا تھا۔’مجھے افسوس یہ ہے کہ وہ دونوں ماں بیٹا ایک ماہ بعد ہی جیل سے باہر آ گئے۔ کچھ دن پہلے ہمیں والدہ کی کال موصول ہوئی اور پتا چلا کہ قاضی نے ان کا سر قلم کرنے ہدایات دی ہیں جبکہ رحم کی اپیل پر قاضی نے 17 سال قید کی سزا سنائی ہے ۔‘

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /نارووال