کیپٹن صفدر کی ضمانت منسوخی کی درخواست مسترد لیکن نیب نے کس لیگی رہنما کی ضمانت ختم کروانے کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا؟ نام سامنے آگیا

کیپٹن صفدر کی ضمانت منسوخی کی درخواست مسترد لیکن نیب نے کس لیگی رہنما کی ...
کیپٹن صفدر کی ضمانت منسوخی کی درخواست مسترد لیکن نیب نے کس لیگی رہنما کی ضمانت ختم کروانے کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا؟ نام سامنے آگیا

  



اسلام آباد (آئی این پی ) قومی احتساب بیورو (نیب )نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما میاں جاوید لطیف کی ضمانت منسوخی کے لئے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا۔درخواست میں میاں جاوید لطیف کی والدہ، بیٹے اور 4 بھائیوں کو فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ نیب میاں جاوید لطیف کے خلاف انکوائری کر رہا ہے، عدالت عالیہ کا حکم نیب بیورو کی انکوائری میں مداخلت ہے، عدالت سے استدعا ہے کہ لاھور ہائیکورٹ کے 26 دسمبر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے۔

یاد رہےکہ اس سے قبل  لاہورہائیکورٹ نے حکومت پنجاب کی کیپٹن ریٹائرڈ صفدرکی ضمانت منسوخی کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر تے ہوئے کہا ہے کہ ، حکومت خود بھی احتجاج کرتی رہی ہے پھر اس کے خلاف پرچہ دینا چاہیے۔   لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ملک شہزاد احمد خان نے حکومت پنجاب کی درخواست پر سماعت کی، ڈپٹی پراسکیوٹر جنرل نے موقف اپنایا کہ کیپٹن (ر)صفدر نے سیشن کورٹ میں ریاستی اداروں کے خلاف میڈیا ٹاک کی، ان کے خلاف مقدمے میں دفعہ 124 اے لگائی گئی جو قابل ضمانت نہیں، اس جرم کی سزا عمر قید ہے۔عدالت نے کہا آپ نے لکھا ہے کہ محمد صفدر نے حکومت کے خلاف احتجاج کا کہا ہے، حکومت خود بھی احتجاج کرتی رہی ہے پھر اس کے خلاف پرچہ دینا چاہیے۔

ڈپٹی پراسیکیوٹر نے کہا کہ احتجاج قانونی دائرہ میں رہ کر کیا جانا چاہیے، محمد صفدر نے حکومت کے خاتمے اور وکلا میں نفرت پیدا کرنے کے لیے تقریر کی، انہوں نے ایکسٹینشن لینے کے لیے عمران خان کو لانے کا بیان بھی دیا۔اس پر عدالت نے استفسار کیا کہ کس کی ایکسٹینشن کی بات کی ہے؟ سرکاری وکیل نے کہا آرمی چیف کی ایکسٹینشن، یہ بات غداری کے زمرے میں آتی ہے۔ بعد ازاں عدالت نے کارروائی کے بعد حکومتی اپیل ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔

مزید : قومی