وہ چیز جس کا ہوائی جہاز میں سفر کرنے والوں کو دہائیوں سے انتظار تھابلا آخر ایجاد کر لی گئی، طیارہ تباہ ہونے کی صورت میں اب مسافر نہیں مریں گے کیونکہ ۔۔۔

وہ چیز جس کا ہوائی جہاز میں سفر کرنے والوں کو دہائیوں سے انتظار تھابلا آخر ...
وہ چیز جس کا ہوائی جہاز میں سفر کرنے والوں کو دہائیوں سے انتظار تھابلا آخر ایجاد کر لی گئی، طیارہ تباہ ہونے کی صورت میں اب مسافر نہیں مریں گے کیونکہ ۔۔۔

  

کیف(مانیٹرنگ ڈیسک) ہم سب جانتے ہیں کہ دوران پرواز ہوائی جہاز کا انجن خراب ہو جائے یا کوئی اور ہنگامی صورتحال ہو تو مسافروں کے پاس پیراشوٹ کے ذریعے چھلانگ لگانے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہوتا۔ بصورت دیگر موت کے منہ میں جانے کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔ اب یوکرین کے انجینئرز نے ہنگامی صورتحال میں مسافروں کو بچانے کا ایک انوکھا اور انقلابی حل ڈھونڈ نکالا ہے۔ یوکرینی انجینئرز نے ایک ایسا طیارہ ڈیزائن کیا ہے جس کی پچھلی باڈی (مسافروں والا حصہ) کیبن اور انجنوں کے ساتھ اس طرح منسلک ہوتا ہے کہ اسے بوقت ضرورت کیبن اور انجن والے حصے سے الگ کیا جا سکتا ہے۔

جیسے ہی جہاز ہنگامی صورتحال سے دوچار ہو گا پائلٹ ایک بٹن دبا کر مسافروں کے حصے کو الگ کر دے گا۔ اس حصے میں دو بڑے پیراشوٹ لگے ہوں گے جو اس کے فضاءمیں آتے ہی کھل جائیں گے اور یہ حصہ آہستہ آہستہ زمین پر آ جائے گا۔ انجینئرز نے یہ حصہ اس طرح ڈیزائن کیا ہے کہ یہ پیراشوٹس کے ذریعے خشکی اور پانی دونوں پر لینڈ کر سکتا ہے۔ یوکرین کے ایوی ایشن انجینئر ولادی میر تیترینکوف کا کہنا تھا کہ ”ہم نے جہاز پر سوار ہر ایک مسافر کی زندگی بچانا ممکن بنا دیا ہے۔“ برطانوی اخبار”دی انڈیپنڈنٹ“ کی رپورٹ کے مطابق اس ڈیزائن کا مرکزی خیال بھی ولادی میرتیترینکوف کا تھا اور وہ تین سال سے اس منصوبے پر کام کر رہے ہیں۔

انجینئرز نے اپنے ڈیزائن میں جہاز کے مسافروں والے حصے کے نیچے پلاسٹک کی ٹیوبز بھی استعمال کی ہیں جس کی بدولت یہ حصہ خشکی پر بھی آسانی سے اتر سکے گا اور پانی پر اسے تیرنے میں بھی مدد ملے گی۔ اس ڈیزائن کے خالق انجینئرز نے ایک سروے بھی کیا ہے۔ انہوں نے آن لائن لوگوں سے پوچھا کہ ان میں سے کون کون اس طرح کے جہاز کا ٹکٹ خریدنا چاہے گا۔ 95فیصد لوگوں نے جواب دیا کہ ”بھلے ہی اس جہاز کا ٹکٹ مہنگا ہو مگر وہ پھر بھی اسی پر سفر کرنے کو ترجیح دیں گے۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -