اولاد سے محروم جوڑوں کے لیے خوشخبری، ’ مقناطیس ‘ کے ذریعے بچے پیداکرنے کا طریقہ ایجاد

اولاد سے محروم جوڑوں کے لیے خوشخبری، ’ مقناطیس ‘ کے ذریعے بچے پیداکرنے کا ...
اولاد سے محروم جوڑوں کے لیے خوشخبری، ’ مقناطیس ‘ کے ذریعے بچے پیداکرنے کا طریقہ ایجاد

  

برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) بے اولادی کے اب تک کئی طرح کے علاج دریافت کیے جا چکے ہیں۔ اب سائنسدان ایسے بے اولاد جوڑوں کی مشکل حل کرنے جا رہے ہیں جو اپنے کمزور نطفے(سپرمز) کی وجہ سے اولاد کی نعمت سے محروم ہیں۔ جرمنی کے ماہرین ایک ایسا ریموٹ کنٹرول مقناطیس ایجاد کر رہے ہیں جس سے سپرمز کو طاقتور بنایا جا سکے گا۔ اس مقناطیس کے ذریعے مرد کے سپرمز کو عارضی طور پر دم دار بنایا جائے گا جس سے ان میں بچہ پیدا کرنے کی صلاحیت آ جائے گی۔ برطانوی اخبار ”ڈیلی میل“ کی رپورٹ کے مطابق جب تک مرد کے سپرمز کی دم نہ ہو ان کا عورت کے بیضوں سے ملاپ نہیں ہو پاتا۔ اس مخصوص شکل کے چھوٹے سے مقناطیس کی کشش سپرمز کو دم دار بنا دے گی۔

ماہرین لیبارٹری میں گائے کے سپرمز پر اس مقناطیس کے کامیاب تجربات کر چکے ہیں اور اب وہ اسے انسان پر آزمانا چاہتے ہیں۔ انسٹیٹیوٹ فار انٹیگریٹو نینوسائنسز کے ماہر لوکاس سوارز کا کہنا تھا کہ ”یہ مقناطیس ماں بننے کی خواہش مند خاتون کے رحم میں رکھا جائے گا اور ریموٹ کنٹرول سے اسے کنٹرول کیا جائے گا۔ یہ مقناطیس رحم میں موجود مرد کے کمزور اور بغیر دم والے سپرمز کو دم دار اور طاقتور بنا دے گا جس سے وہ بیضے سے مل کر بچہ پیدا کرنے کی صلاحیت حاصل کر لیں گے۔ “اس مقناطیس کا نام ”سپرم بوٹ“ رکھا گیا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -