لائن آف کنٹرول کے آر پار کی کشمیری قیادت کی باہمی مشاورت کے لیے سٹیج تیار ہوگیا

لائن آف کنٹرول کے آر پار کی کشمیری قیادت کی باہمی مشاورت کے لیے سٹیج تیار ...

  

سرینگر(کے پی آئی) لائن آف کنٹرول کے آر پار کی کشمیری قیادت کی باہمی مشاورت کے لیے سٹیج تیار ہوگیا ہے۔ اسلام آباد میں ہونے والی دو روزہ کشمیرگول میز کانفرنس میں شرکت کے لیے مقبو ضہ کشمیر کی حریت اور بھارت نوازرہنماوں کومدعو کیا گیا ہے اور 20 اور 21 جنوری کو منعقد ہونے والی دو روزہ گول میز کانفرنس کے دوران تنازعہ کشمیر کے تناظر میں علاقائی صورتحال بشمول پاکستان بھارت تعلقات کے علاوہ بھارتی آئین میں جموں وکشمیر کو حاصل خصوصی پوزیشن کے خلاف سازشوں اور ریاست میں ہندو بنیاد پرستوں کی سرگرمیوں کو بھی زیرغور لایا جا ئے گا۔واضح رہے کہ یہ تقریباً ایک دہائی بعد ایسی پہلی کانفرنس ہورہی ہے جس میں وادی سے تعلق رکھنے والے ر بھارت نوازرہنماوں کو بھی مدعو کیا گیا ہے کشمیر کے آر پار کی قیادت کے درمیان پہلی مرتبہ پاکستان میں اپنی نوعیت کی اہم مشاورتی نشست ہو رہی ہے جس میں آر پار کے کئی سینئر سیاسی لیڈران اور ممبران اسمبلی کے علاوہ دانشور اور صحافی بھی شرکت کر رہے ہیں۔ اسلام آباد میں 20 اور 21 جنوری2016ء کو دو روزہ کانفرنس بعنوان’’تنازعہ کشمیر‘‘ پاکستان بھارت تعلقات اور جنوب ایشیائی خطے کی امن وسلامتی پر اس کے اثرات منعقد ہو گی ۔دو روزہ راؤنڈ ٹیبل کانفرنس اسلام آباد میں واقع کنونشن سنٹر میں منعقد ہو رہی ہے جس میں کشمیر کے آر پار سرگرم مقبو ضہ کشمیر کی حریت اور بھارت نواز رہنما مل بیٹھ کرمسئلہ کشمیر کے تناظر میں پاک بھارت تعلقات کا احاطہ کریں گے۔

معلوم ہوا کہ مجوزہ کانفرنس میں شرکت کے لیے آزاد کشمیر کے صدر سردار محمد یعقوب نے جموں و کشمیر کے متعدد مقبو ضہ کشمیر کی حریت اور بھارت نواز رہنماوں ،سول سوسائٹی سے وابستہ افراد اور صحافیوں کو بھی مدعو کیا ہے جن میں حریت کانفرنس(گ) کے چیئرمین سید علی گیلانی،حریت (ع) چیئرمین میر واعظ عمر فاروق، فریڈم پارٹی سربراہ شبیر احمد شاہ، انجمن شرعی شعیان کے صدر آغا سید حسن،سالویشن موومنٹ کے چیئرمین ظفر اکبر بٹ اور دیگر کئی حریت رہنماوں کے علاوہ بھارت نواز رہنماوں بشمول سی پی آئی ایم لیڈر وممبر اسمبلی کو لگام محمد یوسف تاریگامی اور ممبر اسمبلی لنگیٹ و عوامی اتحاد پارٹی کے صدر انجینئر عبد الرشید شیخ بھی شامل ہیں۔ 20 اور 21 جنوری کو اسلام آباد میں منعقد ہونے والی مجوزہ راؤنڈ ٹیبل کانرنس میں شرکت کے لیے وادی سے تعلق رکھنے والے کئی بھارت نواز رہنما اورمدعوین بھی اسلام آباد جا رہے ہیں جبکہ سید علی گیلانی اور میر واعظ عمر فاروق سمیت حریت رہنماوں کے مجوزہ راؤنڈ ٹیبل کانفرنس میں شرکت کا امکان نہیں ہے کیونکہ ان کے پاس سفری دستاویزات نہیں ہیں۔ اس سلسلے میں میر واعظ عمر فاروق نے بتایا کہ حریت رہنماوں کو مجوزہ راؤنڈ ٹیبل کانفرنس میں مدعو کرنا قابل سراہنا اقدام ہے تاہم انہوں نے کہا کہ وہ کانفرنس میں شرکت نہیں کر سکیں گے کیونکہ ان کے پاس سفر دستاویزات ہی نہیں ہیں۔ میرواعظ عمر فاروق کا کہنا تھا کہ میں ضرور آزاد کشمیر کی حکومت کے زیر اہتمام کشمیر سے متعلق گول میز کانفرنس میں شرکت کے لیے جاتا لیکن میرے پاس سفر دستاویزات نہیں ہیں ادھر حریت(گ) کے ذرائع نے بتایا کہ ابھی مجوزہ کانفرنس میں شرکت کے لیے سید علی گیلانی نے جانے یا نہ جانے کا معاملہ زیر غور نہیں لایا گیا۔اسی طرح فریڈم پارٹی کے ذرائع نے بتایا کہ شبیر احمد شاہ مجوزہ گول میز کانفرنس میں شرکت کا دعوت نامہ موصول ہوا لیکن سفری دستاویزات نہ ہونے کی وجہ سے موصوف کانفرنس میں شرکت نہیں کر سکیں گے۔ بھارت نوازممبر اسمبلی محمد یوسف تاریگامی نے مجوزہ گول میز کانفرنس میں شرکت کے لیے دعوت نامہ موصول ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ابھی انہوں نے یہ فیصلہ نہیں لیا کہ آیا وہ کانفرنس میں شرکت کے لیے پاکستان جائیں گے یا نہیں۔

مزید :

عالمی منظر -