سندھ اسمبلی کا منظور کردہ بل عدلیہ کی آزادی کے منافی ہے، ساجد میر

سندھ اسمبلی کا منظور کردہ بل عدلیہ کی آزادی کے منافی ہے، ساجد میر

  

لاہور (نمائندہ خصوصی) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان سینیٹر پروفیسر ساجد میرنے کہا ہے پیپلزپارٹی سندھ میں محمد شاہ رنگیلہ کا کردار اداکررہی ہے۔سندھ اسمبلی کا منظور کردہ بل عدلیہ کی آزادی کے منافی اورآئین کی صریحاً خلاف ورزی کے مترادف ہے۔ کریمنل پراسیکیوشن سروس ترمیمی بل کے ذریعے سندھ حکومت کاعدالتی اختیارات اپنے ہاتھ میں لینا جمہوریت کی توہین ہے۔اسمبلیاں ڈاکو نواز بن جائیں تو پھر جمہوریت کا اللہ ہی حافظ۔مرکزی دفتر میں اہل حدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی اپنے سے متعلق جرائم پیشہ عناصر اور کرپشن و دہشت گردی کے سنگین مقدمات میں ملوث اپنی پارٹی کے لوگوں کو ہرصورت قانون و انصاف کے شکنجے سے بچانا چاہتی ہے۔ اس کیلئے اسے قانون و آئین سے ماوراء کوئی اقدام ہی کیوں نہ اٹھانا پڑے اور قانون کی دھجیاں ہی کیوں نہ بکھیرنی پڑیں۔انہوں نے کہا کہ اس آئینی پوزیشن کی موجودگی میں سندھ اسمبلی کے ذریعے سندھ کریمنل پراسیکیوشن سروس ترمیمی بل منظور کراکے بادی النظر میں کسی مقدمہ کے فیصلہ کا عدالتی اختیار سندھ حکومت کو تفویض کرنے کی کوشش کی گئی ہے جوآئین و قانون کا مذاق اڑانے کے بھی مصداق ہے۔

ساجدمیر

مزید :

صفحہ آخر -