ہائی ویز سرکل سرگودھا میں تھیکدار کو 56 لاکھ اضافی ادا خوشاب میں سڑکوں کی ناقص تعمیر

ہائی ویز سرکل سرگودھا میں تھیکدار کو 56 لاکھ اضافی ادا خوشاب میں سڑکوں کی ...

  

لاہور(شہباز اکمل جندران) محکمہ مواصلات و تعمیرات پنجاب میں سنگین نوعیت کی بے ضابطگیاں سامنے آگئیں۔ھائی ویز سرکل سرگودھا کے انجنئیروں نے ایک طرف خلاف ضابطہ ٹھیکیدار کو 56لاکھ روپے اضافی طورپر ادا کردئیے تو دوسری طرف سرگودھا اور خوشاب میں خادم پنجاب دیہی روڈز پروگرام کے تحت تعمیر ہونے والی سٹرکوں میں مبینہ طورپر ناقص مٹیریل استعمال کیا ۔صورتحال کے پیش نظر محکمے نے ذمے داروں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے محض تحریری طورپر وارننگ دیکر معاملہ ختم کردیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سی اینڈڈبلیو پنجاب کے ہائی ویز سرکل سرگودھا میں ان دنوں کرپشن اپنے عروج پرہے۔ بتایا گیا کہ ہائی ویز سرکل سرگودھا ٹو کے ایگزیکٹو انجنئیر اعجاز احمد چیمہ ، ایس ڈی او سب ڈویژن نمبر تین ہائی ویز سرگودھا بدر سلطان اور سب انجنئیر ظفر اقبال نے ایف ایس ڈرین بائی پاس سے اڈا47روڈ کی توسیع کے منصوبے میں ٹھیکیدار کو 56لاکھ روپے اضافی طورپر اداکردیئے ۔خلاف ضابطہ ادائیگی سامنے آنے پر محکمے نے انجنئیروں کے خلاف تادیبی کارروائی کرنے کی بجائے محض انہیں تحریری طورپر وارننگ دیکر معاملہ ہی دبا دیا۔بتایا جاتا ہے کہ ایکسین ہائی ویز سرگودھا اعجاز احمد چیمہ کا شمارسیکرٹری سی اینڈڈبلیو کے چہیتے انجنئیروں میں ہوتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ اس کے خلاف کارروائی نہیں کی جاتی ۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ سرگودھا اور خوشاب میں خادم پنجاب دیہی روڈز پروگرام کے تحت تعمیر کی جانے والی سٹرکوں میں ناقص مٹیریل استعمال کیا گیا ہے ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب،اینٹی کرپشن ،ڈی سی او اور ای ڈی او ورکس کے علاوہ سیکرٹری سی اینڈڈبلیو ، چیف انجنئیر ہائی ویز نارتھ پنجاب اور سپرنٹنڈنٹ انجنئیر ہائی ویز سرکل سرگودھا کے دفاترمیں سرگودھا اور خوشاب میں کے پی آر آر پروگرام میں سٹرکوں کی ناقص کے خلاف کئی درخواستیں موصول ہوچکی ہیں۔لیکن ہائی ویز سرکل سرگودھا اور سی اینڈڈبلیو کی انتظامیہ ایسی درخواستوں پر کارروائی کرنے کی بجائے انہیں دبادیتی ہے۔ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت کی طرف سے صوبائی محکمہ مواصلات وتعمیرات کو خادم پنجاب دیہی روڈ ز پروگرام کے فیز ون میں صوبے کے 32اضلاع میں 22سو کلومیٹر طویل 255سٹرکوں کی تعمیر و توسیع کا ٹاسک دیا گیا۔یہ سٹرکیں 30ستمبر تک 2015تک مکمل کرنا تھیں۔لیکن بروقت مکمل نہ ہوسکیں۔ جس پر محکمے نے ایگزیکٹو انجنئیر ہائی ویز سرگودھا ٹو اعجاز احمد چیمہ سمیت کئی انجنئیروں کوبار بار تحریری طورپر وارننگ جاری کی ۔جس پر ان انجنئیروں نے ایک طرف جلدبازی کا سہارا لیا تو دوسری طرف چہیتے ٹھیکیداروں سے مبینہ طورپر رشوت لیکر انہیں ناقص مٹیریل کے استعمال کی اجازت بھی دیئے رکھی۔نتیجے کے طورپر نئی بننے والی سٹرکیں تعمیر کے فوری بعد ہی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے لگیں۔

بے ضابطگیاں

مزید :

صفحہ آخر -