نواز شریف اور راحیل شریف ثالثی مشن پر آج سعودی عرب پہنچیں گے،دونوں ممالک کیلئے قابل قبول تجاویز تیار

نواز شریف اور راحیل شریف ثالثی مشن پر آج سعودی عرب پہنچیں گے،دونوں ممالک ...
 نواز شریف اور راحیل شریف ثالثی مشن پر آج سعودی عرب پہنچیں گے،دونوں ممالک کیلئے قابل قبول تجاویز تیار

  

اسلام آباد (صباح نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک ،آن لائن) وزیر اعظم نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف ثالثی مشن پر آج سعودی عرب اور کل ایران کا دورہ کریں گے۔ پاکستان کی اعلی سیاسی و عسکری قیادت نے ایران اور سعودی عرب میں کشیدگی میں کمی کا کردار ادا کر نے کا فیصلہ کیا ہے اور اس مقصد کیلئے اعلی سطح پر سفارتی امن مشن شروع کیا جارہا ہے وزیر اعظم نواز شریف کی وطن واپسی پر انکی جانب سے پارلیمینٹ میں اس غیرمعمولی سفارتی امن مشن پر پالیسی بیان متوقع ہے۔ وزیر اعظم نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف سعودی عرب اور ایران کے دوروں میں دونوں ملکوں کی قیادت سے دوطرفہ تنازعہ کے پرامن حل کے لئے بات چیت کریں گے۔رپورٹس کے مطابق پاکستان کی اعلی قیادت نے ایران اور سعودی عرب کے درمیان کشیدگی کم کر انے کیلئے کوششیں تیز کر دی ہیں اس ضمن میں دونوں ملکوں سے بھی مثبت اشارے ملے ہیں۔ وزیر اعظم نوازشریف پہلے مرحلے میں پیر کو سعودی عرب جائیں گے جہاں وہ سعودی فرمانروا سمیت اعلی قیادت سے بات چیت کریں گے۔ اسکے بعد وہ منگل کو ایران جائینگے جہاں وہ ایرانی صدر حسن روحانی اور دیگر اعلی حکام سے ملاقاتیں کرینگے پاکستان نے دونوں برادر ملکوں کے درمیان ثالثی کے لئے تجاویز مرتب کر لی ہیں۔ چیف آف آرمی سٹاف جنرل را حیل شریف کے علا وہ مشیر خارجہ سرتاج عزیز اور معاون خصوصی طارق فاطمی بھی ساتھ ہونگے۔ رپورٹس کے مطابق پاکستان نے پہلے روز سے ہی سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی کم کر انے کی کاوشیں شروع کر دی تھیں سعودی عرب کے اعلی عہدیداروں کے پاکستان کے حالیہ دوروں میں بھی اس معاملے پر بات چیت ہوئی پاکستان کا اس معاملے پر ایرانی قیادت سے بھی قریبی رابطہ بتایا گیا ہے ۔ملاقات میں وزیر اعظم نواز شریف سعودی قیادت کو یقین دلائیں گے کہ اگر سعودی عرب کی سالمیت کو کوئی خطرہ ہوا تو پاکستان اپنے قابل اعتماد دوست سعودی عرب کے شانہ بشانہ کھڑا ہو گا۔ذرائع کا کہنا ہے وزیر اعظم سعودی عرب کے دورے کے بعد ایران جائینگے اور ایرانی قیادت سے ملاقات کرینگے اور کل منگل کو تہران سے واپس آجائیں گے۔ پاکستان کی ثالثی کی کوششوں سے دونوں برادر اسلامی ممالک میں جلد سفارتی تعلقات معمول پر آنے کے امکان روشن ہو گئے ہیں۔پاکستان کی ثالثی کی ان کوششوں کے حوالے سے پوری پارلیمنٹ وزیراعظم کی پشت پر ہے۔ ذرائع کے مطابق تنازعہ کے حل کے لیے پاکستان طرفین کے لئے قابل قبول تجاویز سے مرتب کرلی ہیں۔ وزیراعظم نے اپنے رفقاء سے صلاح مشورہ کیا ہے۔ اعلیٰ سطح پر سعودی عرب اور ایران میں پاکستان کی ثالثی کی ان کوششوں میں پیشرفت کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔پاکستان کی عوام نے ثالثی کی ان کوششوں سے بھر پور امیدیں وابستہ کرلیں اور توقع ظاہر کی ہے کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف کا تنازعہ کے پر امن حل کے لیے یہ سفارتی مشن کامیاب رہے گا۔یاد رہے کہ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں مشرق وسطیٰ کی کشیدہ صورتحال سعودی ایران تنازعے پر ان دنوں پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں بحث کا سلسلہ جاری ہے۔مشیر خارجہ سرتاج عزیز سینٹ کو ان کیمرہ اجلاس میں بریفنگ دے چکے ہیں جہاں انہوں نے ڈھائی گھنٹہ کی طویل نشست میں مختلف جماعتوں کے 29 اراکین سینٹ کے سوالات کے جوابات بھی دیئے تھے مشیر خارجہ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی خارجہ امور کو بھی بریفنگ دے چکے ہیں۔ پیر کو وزیردفاع خواجہ محمد آصف اوپن اجلاس میں مشرق وسطیٰ کی صورتحال سعودی ایران تنازعہ پر پاکستان کی پوزیشن اور سعودی وزیر دفاع کے دورہ پاکستان پر بریفنگ دیں گے ثالثی کے لیے وزیراعظم کو پارلیمنٹ کو مکمل تائید اور حمایت حاصل ہے۔

مزید :

صفحہ اول -