پاکستان میں دہشتگردی کی ہر کارروائی میں امریکہ ،بھارت اور اسرائیل کا ہاتھ ہوتا ہے: سراج الحق

پاکستان میں دہشتگردی کی ہر کارروائی میں امریکہ ،بھارت اور اسرائیل کا ہاتھ ...

  

پشاور(اے این این)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے پارٹی کی یوتھ پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں دہشتگردی کی ہر کارروائی میں امریکہ،بھارت اور اسرائیل کا ہاتھ ہوتا ہے،امریکہ کی دوستی اس کی دشمنی سے زیادہ خطرناک ہے،ملک میں کرپشن کرنے والوں کی تفصیلات اکٹھی کر لی ہیں ج وجلد عوام کے سامنے لائیں گے،نوجوان چوروں کے گریبان پکڑ کر حساب لیں گے، عوام کو دو وقت کی روٹی میسر نہیں حکمرانوں کے کتے بھی پلاؤ کھاتے ہیں ، ملک میں سونے کے پہاڑ ہیں جن پر چور بیٹھے ہیں ،ان چوروں کو پکڑ کر دریائے سندھ میں ڈبونا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے طہماس خان سٹیڈیم پشاور میں جماعت اسلامی یوتھ کے زیر اہتمام تین روزہ فیسٹیول کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جماعت اسلامی یوتھ کے مرکزی صدر زبیر احمد گوندل،جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کے امیر مشتا ق احمد خان ،جنرل سیکرٹری عبد الواسع ،جماعت اسلامی یوتھ کے صوبائی صدر حافظ ابرار احمد ،ضلعی صدر حافظ حمید اللہ ،جنرل سیکرٹری صدیق پراچہ ،امیر جماعت اسلامی ضلع پشاور صابر حسین اعوان نے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے مفت لکی ڈرا کے خوش نصیبوں میں موٹر سائیکل ،وشنگ مشینیں اور موبائل سیٹس اوردیگر اشیاء بھی تقسیم کیں ،امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ حکمرانوں کی کرپشن کی وجہ سے ملک تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے ہر ادارہ تباہ و برباد ہے انہوں نے کہا کہ آج یہ ہزاروں نوجوان ان حکمرانوں سے پوچھ رہے ہیں کہ جو پاکستان قائد اعظم ؒ اور علامہ اقبال نے دیا تھا اور جس پاکستان کیلئے لاکھوں لوگوں نے جام شہادت نوش کیا اور کروڑوں لوگوں نے ہجرت کی اس پاکستان کے حکمران طبقے نے اس ملک کی حفاظت نہیں کی اور آج یہ نوجوان طبقہ وہ پاکستان چاہتا ہے جس کا ویژن قائد اعظم اور علامہ اقبال نے دیا تھا اصلی اور اسلامی پاکستان کا جس میں تعلیم صحت ، اور چھت کی ذمہ داری ریاست کی ذمہ داری ہے وہ پاکستان کہاں ہے آج ایک ماں اوربہن اپنے بچے اور بھائی کی تعلیم کیلئے اپنے زیوارت کیوں فروخت کررہی ہیں انہوں نے کہا کہ ہر نوجوان کا سوال ہے کہ حکمران اشرافیہ کے کتے پلاؤ کھاتے اور قوم کے بچے گندگی کے ڈھیروں میں رزق تلاش کرنے پر مجبور کیوں ہیں،انہوں نے کہا کہ آج نوجوان ملک سے باہر جانے پر مجبور کیوں ہیں ،نوجوان ڈگریاں ہاتھوں میں لئے پھرتے ہیں اور روزگار سے محروم کیوں ہیں پاکستان کے نوجوان حکمرانوں کی نااہلی کی وجہ سے اپنے گردے فروخت کرنے پر مجبور ہیں انہوں نے کہا کہ استحصالی نظام جہاں پر سفارش اور رشوت کے بغیر روزگار کا حق نہیں ملتا انصاف نہیں ملتا اس استحصالی نظام نے نوجوانوں کو دہشت گرد بنایا انہوں نے کہا کہ ملک سے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے ضروری ہے کہ نوجوانوں کو اس دہشت گردی کے استحصالی نظام سے نجات دلائی جائی انہوں نے کہا کہ اس سسٹم نے نوجوانوں کو مجرم بنایا اور مایوسیوں کے تحفے دئے اور نوجوانوں کو خودکشیوں پر مجبور کیا لیکن میں نوجوانوں سے کہتا ہوں کہ مایوس نہیں ہونا اورہم نے ملکر اس ظالمانہ سسٹم اور سٹیٹس کو کو درگور کرنا ہے انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس نوجوانوں کیلئے پروگرام موجود ہے اور ہم اعلانات کی بجائے عملی کام کرکے دکھاتے ہیں

مزید :

صفحہ اول -