پی سی بی کو محمد عامر کی واپسی پر عوامی ریفرندم کرانا چاہئے تھا:کرکٹر یونس خان

پی سی بی کو محمد عامر کی واپسی پر عوامی ریفرندم کرانا چاہئے تھا:کرکٹر یونس ...

  

چارسدہ (بیورورپورٹ) پاکستان کے ریکارڈ ساز بیٹسمین یونس خان نے کہا ہے کہ حساس نوعیت کا ایشو ہونے کی وجہ سے پی سی بی کو محمد عامر کی واپسی پر عوامی ریفرنڈم کرانا چاہئے تھا۔ پاکستان سپر لیگ ضرور کامیاب ہوگی ۔ پی سی بی میں کچھ لوگوں کو لانا ہوگا تاکہ مستقبل کی منصوبہ بندی کرسکے ۔ رائٹ مین فار رائٹ جاب فارمولا ہو تو کرکٹ کے معاملات خود بخود ٹھیک ہونگے ۔ ہمیں کنویں کا مینڈک بن کر ہر چیز کی ذمہ داری غیروں پر نہیں ڈالنا چاہئے۔ یاسر شاہ کی بات میں کچھ وزن نہیں کہ غلطی سے بیوی کی گولیاں کھائی ۔ وہ چارسدہ پریس چیمبر میں میٹ دی پریس میں اظہار خیال کر رہے تھے ۔ یونس خان نے کہاکہ محمد عامر ، محمد آصف اور سلمان بٹ کی وجہ سے پاکستان کی بڑی بدنامی ہوئی ۔ ٹیم میں ان کی شمولیت پر قوم تقسیم ہوئی ۔ کچھ لوگ ان کو ٹیم میں اور کچھ لوگ باہر دیکھنا چاہتے ہیں۔ پی سی بی کو ایسے حساس ایشو پر عوام کی رائے یا ریفرنڈم کرانا چاہئے تھامگر پی سی بی نے ان کو ٹیم میں شامل کیا ہے اور اب اس کے نتائج دیکھ کر پی سی بی کو فیصلہ کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کو بھارت میں منعقد ہونے والے ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ میں شرکت کرنا چاہیے کیونکہ یہ آئی سی سی کا ٹورنامنٹ ہے اور آئی سی سی پاکستانی ٹیم کی سیکیورٹی اور دیگر معاملات کی ذمہ دار ہو گی ۔بھارت کرکٹ ٹیم کی پاکستان نہ آنے کے حوالے سے یونس خان نے کہا ہے کہ پی سی بی آئی سی سی کو اپروچ کریں مگر یہ بھی حقیقت ہے کہ آئی سی سی کسی ممبر ملک کو زبر دستی دوسرے ملک نہیں بھیج سکتی بلکہ آئی سی سی کا کر دار facilitaterکا ہے ۔ آئی سی سی کے صدر ظہیر عباس کو اس حوالے سے کر دار ادا کرنا ہو گا۔پاکستان سپر لیگ کے حوالے سے یونس خان نے کہا کہ پی ایس ایل ضرور کامیاب ہو گی کیونکہ ہمارے پاس ایسے لوگ موجود ہیں جو گراؤنڈ میں تماشائیوں کی دلچسپی کا سامان پید ا کر یں ۔ سٹار لگ سپنر یاسر شاہ پرپابندی کے حوالے سے انہوں نے کہاکہ ہمیں کنویں کا مینڈک نہیں بننا چاہیے ۔ہم ہر چیز کاالزام باہر کے ملکوں پر ڈالتے ہیں اور پھر کہتے ہیں کہ اللہ کو یہ منظور تھا ۔بطور کرکٹر ہمیں سوچنا چاہیے کہ تھوڑی سی غلطی ملک کی بد نامی کا باعث بن سکتی ہے ۔ یاسر شاہ کی طرف سے وضاحت جس میں یاسر شاہ نے کہا تھا کہ غلطی سے بیوی کی گولیاں کھا لی تھی۔ یونس خان نے اس حوالے سے کہا کہ اب یاسر سے پوچھنا چاہیے کہ بیوی نے کوئی سازش تو نہیں کی ۔یونس خان نے انکشاف کیا کہ وہ پی سی بی کے چےئرمین شہریار خان کے مشیر ہیں اور ان کے حکم کا پابند ہے مگر مجھ سے چیئر مین کوئی مشورہ مانگے تب حاضر ہونگا ۔بگ تھری کے حوالے سے انہوں نے کہاکہ اس میں شک نہیں کہ آسٹریلبا، بھارت اور انگلینڈ سے سب سے زیادہ رونیو جمع ہو تاہے مگر بگ تھری آئی سی سی کے انڈر ہے ۔پاکستان میں کرکٹ کے مستقبل کے حوالے سے انہوں نے کہاکہ پاکستان خود مختار ملک ہے ۔ پی سی بی اورپاکستان کرکٹ میں کچھ لوگ لانے ہونگے تاکہ کرکٹ کی بہتری کیلئے پلان کریں اوررائٹ مین فار رائٹ جاب فارمولا اپنا یا جائے تو کرکٹ کے معاملات خود بحود ٹھیک ہو جائینگے ۔ یونس خان نے ون ڈے کرکٹ سے اپنی ریٹائرڈ منٹ کے حوالے سے صرف اتنا کہا کہ 2011سے 2015تک انہوں نے بہت کم ایک روزہ میچ کھیلے اگر ان کی جگہ دوسرا کھلاڑی ہوتا تو یقیناًچار سال پہلے ریٹائرڈ ہوتا۔ ویسے بھی وہ با عزت طریقے سے ون ڈے کرکٹ چھوڑنا چاہتے تھے اور وہی کیاجبکہ ٹسٹ کرکٹ سے ریٹائرڈ منٹ کے حوالے سے بھی ایسا ہی کرونگا۔

مزید :

پشاورصفحہ اول -