صلاحیتوں کی کمی نہیں،معیاری اور فنی تعلیم کے فروغ پر خصوصی توجہ دی جائے :گورنر پنجاب

صلاحیتوں کی کمی نہیں،معیاری اور فنی تعلیم کے فروغ پر خصوصی توجہ دی جائے ...

  

ملتان (سٹاف رپورٹر)گور نر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے کہا ہے کہ یونیورسٹیوں میں تعلیمی معیار کو بہتر بنا نے پر خصوصی توجہ دی جائے ۔ہمارے طلبا ء میں صلاحیتوں کی کمی نہیں ، انہیں بہترین تعلیم و تربیت اور رہنمائی کی ضرورت ہے ۔زکریا یو نیورسٹی میں میڈیکل کالج اور ٹیچنگ ہسپتال کے قیام کی فیزیبلٹی تیار کی جائے گی ۔زرعی یونیورسٹیاں اچھی کوالٹی اور زیادہ پیداوار کے حامل بیج تیار کر نے میں اپنا کرادا کریں ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار سرکٹ ہاؤس میں ملتان کی 4یونیورسٹیز کے وائس چانسلرز کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر کمشنر ملتان ڈویژن کیپٹن (ر) اسد اللہ خان ،وائس چانسلر بہاء الدین زکریا یونیورسٹی ڈاکٹر طاہر امین ،وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی فیصل آباد ڈاکٹر اقرار خان،وائس چانسلر خواتین یونیورسٹی ڈاکٹر شاہدہ حسنین ،وائس چانسلر نواز شریف زرعی یونیورسٹی ملتان ڈاکٹر آصف علی ،ڈین بی زیڈ یو ڈاکٹر محمد ایازرانا ، ایسوسی ایٹ پروفیسر نواز شریف زرعی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر اشتیاق احمد رجوانہ بھی موجود تھے۔گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے مزید کہا کہ وائس چانسلرز تمام فیصلے میرٹ پر کریں اور معاملات میں متوازن رویہ اختیار کریں ۔یونیورسٹیز کی بہتری کے لئے جامع حکمت عملی بنا ئی جائے ۔ گورنر پنجاب نے مزید کہا کہ امریکہ کی ایک بڑی یونیورسٹی کے ساتھ بات چیت جاری ہے زکریا یونیورسٹی کے ساتھ اس کی پارٹنر شپ کرائی جائے گی تاکہ طلبا ء کو بین الا قوامی معیار کی تعلیم فراہم کی جا سکے ۔ گورنر پنجاب نے وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی فیصل آباد ڈاکٹر اقرار خان کی نواز شریف زرعی یونیورسٹی ملتان کے حوالے سے خدمات کو سراہا اور خصوصی شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی ملتان کے ابتدائی مراحل کو طے کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے ۔ گورنر نے ڈاکٹر محمد اشتیاق رجوانہ کی زرعی یونیورسٹی وہاڑی کیمپس کے حوالے سے خدمات کی بھی تعریف کی ۔ اس موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے وائس چانسلر زکریا یونیورسٹی ڈاکٹر طاہر امین نے بتایا کہ تعلیمی معیار کو بہتر بنانے کے لئے اقدا مات کئے جا رہے ہیں جس کے لئے یونیورسٹی میں اہم تبدیلیاں کی گئی ہیں اور مختلف مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جا رہے ہیں ۔ فاصلاتی نظام تعلیم متعلقہ ڈیپارٹمنٹس میں بھیج دیا گیا ہے ۔ جن پروگرامز کی فیکلیٹی موجود نہیں انہیں بند کر دیا جائے اس سے کوالٹی میں بہتری آئے گی ۔ فاصلاتی نظام تعلیم سے ایم فل پروگرامز ختم کر دیئے گئے ہیں ۔ ڈاکٹر اسحاق فانی کی مختلف بے ضابطگیوں کی انکوائری جاری ہے ۔وائس چانسلر نوازشریف زرعی یونیورسٹی ڈاکٹر آصف علی اور وائس چانسلر خواتین یونیورسٹی شاہدہ حسنین نے بھی اجلاس میں بریفنگ دی۔بعد ازاں گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے میپکو حکام کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ شیڈول کے بغیر بجلی بند نہ کریں ۔اس موقع پر چیف ایگزیکٹو آفیسر میپکو فضل اللہ درانی ، جنرل منیجر میپکو چوہدری ارشد ، ڈائریکٹر کمرشل ملک امتیاز احمد بھی موجود تھے۔ گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے کہا ہے کہ ہم اپنے بچوں کو ہنر مند بنا کر مستقبل میں بہترین روز گار کے قابل بنا سکتے ہیں ۔اس وقت دنیا میں ہنر مند افراد کی بہت قدر ہے اور بیرون ملک ان کی بہت ڈیمانڈ ہے بے سہارا بچوں کی تعلیم و تربیت اورکفالت کر نا بہت بڑی نیکی ہے۔ ایس او ایس ویلج کی انتظامیہ کی اس حوالے سے خدمات قابل تحسین ہیں ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار ایس او ایس ملتان انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر کمشنر ملتان ڈویژن کیپٹن (ر) اسد اللہ خان، آر پی او طارق مسعود یٰسین، معروف صنعتکار میاں مغیث اے شیخ ، مخدوم جاوید ہاشمی ، خواجہ یوسف ، میاں تنویر اے شیخ ، اظہر بلوچ ، ذوالفقارعلی انجم ، ایس او ایس ملتان انسٹی ٹیو آف ٹیکنالوجی کے ایگزیکٹو بورڈ کی چیئر پرسن فوزیہ مغیث شیخ، جنرل سیکرٹری مہناز فرید شیخ ، ٹریژر ہانیہ تسنیم سلطان، ٹیکنیکل ایڈوائزر نجیب احمد ، ممبران بختاور تنویرشیخ ، محمد انیس خواجہ اور معززین شہر بھی موجود تھے۔گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے مزید کہا کہ میاں مغیث اے شیخ کا خاندان درد دل رکھنے والا ہے ،ن کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ میری بھی خواہش ہے کہ میں بھی کار خیر کے کاموں میں حصہ لوں اور میرے اوپر جو اس دھرتی کا قرض ہے اس کو اتارو ں۔۔ گورنر پنجاب نے مزید کہا کہ ایس او ایس ملتان انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کا قیام ہمارے بچوں کو ٹیکنیکل تعلیم سکھانے میں اہم کردار ادا کرے گا ۔جو آسانی سے اپنا روز گار کما سکیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس ادارے سے فارغ ہونے والے بچوں کو ڈاکٹر امجد ثاقب کے ادارے "اخوت" سے قرض لیکر دیا جائے گا تاکہ وہ اپنا ذاتی کاروبار شروع کرسکیں ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جنرل سیکرٹری ایگزیکٹو بورڈ ایس او ایس ملتان انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنا لوجی مہناز فرید شیخ نے کہا کہ اس پراجیکٹ پر اکتوبر 2015 ؁ء میں کام شروع کیا گیا تھا ۔اب اس ادارے میں 250طلبا ء زیر تعلیم ہے جو ارد گرد کے دیہی علاقوں سے آتے ہیں ۔جن کی معاشی حالت بہتر نہیں ہے ۔ ہمارا مقصد ان نوجوانوں کو ہنر مند بنا نا اور اپنے پاؤں پر کھڑا کرنا ہے ۔ ہم خواتین کو بھی با اختیار بنا کر ان کے سماجی و معاشی حالات کو بہتر کر نے کی کوشش بھی جاری رکھے ہوئے ہیں ۔انہوں نے مزید بتایا کہ اس ادارے کے لئے عمارت کالونی ٹیکسٹائل ملز کی طرف سے عطیہ کی گئی ہے ۔ تقریب میں ایس او ایس ویلج کی آفیسر مس رخسانہ نے اپنے بارے میں بتایا کہ میں 8سال کی بچی تھی جب میں بے سہارا ہو گئی اور ایس او ایس ویلج میرا سہارا بنا ۔ یہاں مجھے ماں کا پیار ملا، میری کفالت کا اہتمام ہوا ،مجھے اچھی تعلیم و تربیت ملی اور زندگی کے ہر قدم پر رہنمائی بھی ، آج میں اسی ادارے میں کام کر رہی ہوں ،میری کامیابی ایس او ایس ویلج کی مرہون منت ہے ۔ مس رخسانہ کی باتیں سن کر تقریب میں موجود لوگوں کی آنکھیں نم ہو گئیں ۔ تقریب میں بچوں نے نغمہ "ہمیں کچھ کرنا پڑے گا" انتہائی خوبصورت انداز میں پیش کیا ۔ اور پاکستان کے پرچم کو بھی سلامی دی ۔ بعد ازاں گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے ایس او ایس ملتان نسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنا لو جی کا افتتاح کیا اور انسٹی ٹیوٹ کے مختلف شعبوں کا بھی معائنہ کیا ۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -