امریکی سفارتخانہ تل ابیب منتقل ہواتووفد نہیں بھیجیں گے،یورپی یونین

امریکی سفارتخانہ تل ابیب منتقل ہواتووفد نہیں بھیجیں گے،یورپی یونین

برسلز(این این آئی)نومنتخب امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ بیانات پر یورپی ممالک کی قیادت نے سخت رد عمل کا اظہار کیا ہے، یورپی یونین کی خارجہ پالیسی چیف نے امریکی سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کرنے پر سنگین نتائج سے خبردار کیا ہے ۔میڈیارپورٹس کے مطابق برسلز میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے یورپی یونین کی خارجہ پالیسی چیف فیڈریکاموگرینی نیواضح کیاکہ امریکی سفاتخانے کی منتقلی کی صورت میں وہ تل ابیب سے اپنے وفدمنتقل نہیں کریں گے۔ ایسے یکطرفہ فیصلوں سے گریز کرنا چاہیے جن سے دنیا کے بڑے حصے پرسنگین اثرات ہوں۔ادھرنومنتخب امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کی یورپی یونین پر تنقید کے بعدفرانس کے صدر فرانسوااولاند کاردعمل بھی سامنے آیاہے،انہوں نے کہاکہ یورپ بین البراعظمی تعاون چاہتاہے ہماری اقدار اور مفادات کو ترجیح حاصل ہے۔ یورپی یونین کواپنے معاملات چلانے کیلئے کسی غیررکن ملک کیمشورے کی ضرورت نہیں۔

جرمن چانسلر مرکل کا کہنا تھا کہ یورپی اتحاد ہی ڈونلڈ ٹرمپ کیبیان کا بہترین جواب ہے۔جرمن وائس چانسلرزِیکمار گیبریئل نے کہاکہ مشرقِ وسطیٰ میں بغیر سوچے سمجھے امریکی مداخلت نے ہی پناہ گزینوں کے بحران کو جنم دیا تھا۔دوسری جانب امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے بھی دوسرے ملکوں کے سیاسی معاملات پرنومنتخب امریکی صدرٹرمپ کے بیانات کونامناسب قراردیا۔امریکی نو منتخب صدر نے کہا تھا کہ برطانیہ کی جانب سے برگزٹ کا فیصلہ بہت اچھا تھا کیونکہ یورپی یونین ٹوٹنے کے دہانے پر ہے۔ انہوں نے جرمن چانسلر کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

مزید : عالمی منظر