سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی کیخلاف عدلیہ مخالف تقریر پر کارروائی کیلئے دائر درخواست پر سماعت 23 جنوری تک ملتوی کرنیکا حکم

سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی کیخلاف عدلیہ مخالف تقریر پر کارروائی کیلئے دائر ...

ملتان (خبر نگار خصوصی) لا ہورہائیکورٹ ملتان بینچ نے سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی کے خلاف عدلیہ مخالف تقریر پر کارروائی کرنے کی درخواست پر سماعت 23 جنوری تک ملتوی کرنے کا(بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

حکم دیاہے۔فاضل عدالت میں ملتان کے شہبازعلی خان گرمانی ایڈووکیٹ نے درخواست دائر کی تھی کہ پاکستان مخالف افرادمذموم مقاصد کے لئے ملک کی عدلیہ سمیت اداروں کوبدنام کرنے کے لئے کارروائی کرتے رہتے ہیں۔اس ضمن میں یکم جنوری کو ٹی وی چینل پرسابق ممبرقومی اسمبلی جاوید ہاشمی نے عدلیہ کے خلاف بیان دیاجس میں سابق چیف جسٹس پاکستان ناصرالملک سمیت دیگر کو نشانہ بنایاگیااورغلط الفاظ استمعال کئے ہیں جس پر وزیراعظم پاکستان ،وزارت داخلہ،قانون،اطلاعات،کیبنٹ ڈویڑن ،سپیکر قومی اسمبلی ،چیئرمین سینٹ ،الیکشن کمیشن اورپیمرا کو درخواستیں بھجوائی کہ قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے جبکہ قانون کے مطابق مذکورہ ذمہ داران کارروائی کرنے کے پابندہیں نیز جاوید ہاشمی کے جانب سے بدنیتی پر مبنی اقدام کیاگیا ہے اس لئے ان کے خلاف آرٹیکل 204 کے تحت کارروائی کرنے کے ساتھ ان کے بیان نشر اورشائع کرنے سے بھی روکنے کا حکم دیاجائے۔اس ضمن میں گزشتہ روز سماعت پر وفاقی وصوبائی لاء افسران عدالت پیش ہوئے جنہوں نے تیاری کے لئے مہلت کی استدعا کی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر