دینی مدارس کو مشکوک قرار دینے والے خود مشکوک ہیں‘ مولانا حنیف جالندھری

دینی مدارس کو مشکوک قرار دینے والے خود مشکوک ہیں‘ مولانا حنیف جالندھری

ملتان (سٹی رپورٹر)وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد حنیف جالندھری نے کہا ہے کہ دینی مدارس کو مشکوک قرار دینے والے خود مشکوک ہیں، سندھ حکومت مشکوک سرگرمیوں سے باز رہے اور اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کے لیے دینی مدارس کو ڈھال کے طور پر استعمال نہ کرے۔ جاری کردہ بیان میں ان کا مزید کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے وزارت داخلہ کے نام مراسلہ بھیجا ہے جس (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

میں 80 دینی مدارس کو مشکوک سرگرمیوں میں ملوث قرار دیا گیا ہے۔ اس مراسلے میں ان مدارس کا نام تک نہ لینا اور ان کے حوالے سے کسی قسم کے شواہد اور ثبوت کا ذکر نہ کرنا معاملے کو مشکوک بناتا ہے۔ افسوسناک امر یہ ہے کہ اس مراسلے میں بعض ایسے مدارس کا حوالہ دیا گیا ہے جو صوبہ سندھ کی حدود سے باہر ہیں۔ انہوں نے پی پی کی مرکزی قیادت سے اس صورتحال کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔ دریں اثناء وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد حنیف جالندھری نے جامعہ دارالعلوم کراچی، جامعہ اسلامیہ بنوری ٹاون، جامعہ فاروقیہ اور جامع الرشید سمیت دیگر اہم مدارس کا دورہ کیا اور وفاق المدارس کے قائم مقام صدر مولانا ڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر،مفتی اعظم پاکستان مولانا مفتی محمد رفیع عثمانی،مولانا مفتی محمد تقی عثمانی،مولانا مفتی عبدالرحیم،مولانا امداد اللہ،مولنا ڈاکٹرمحمدعادل خان،مولانا عبیداللہ خالد اوردیگر سے ملاقاتیں کیں اور مختلف امور پر مشاورت اور تبادلہ خیال کیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر