سمال ڈیمز کی تعمیر سے متعلق ٹینڈرز کیخلاف حکم امتناعی میں جمعہ تک توسیع

سمال ڈیمز کی تعمیر سے متعلق ٹینڈرز کیخلاف حکم امتناعی میں جمعہ تک توسیع

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ نے سمال ڈیمز کی تعمیر سے متعلق ٹینڈرزجاری کرنے کے خلاف حکم امتناعی میں جمعہ کے روز تک توسیع کردی اوردرخواست گذاروں کی رٹ درخواستیں خیبرپختونخواپبلک پروکیورمنٹ اتھارٹی (کیپرا) کو ارسال کردیں جس پرکیپراجمعہ کے روز سماعت کرکے فیصلہ دے گی چیف جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس اکرام اللہ پر مشتمل دورکنی بنچ نے قاضی محمد انورٗفداگل اورعمرفاروق میانخیل ایڈوکیٹس کی وساطت سے دائراورنگزیب اینڈسنز اوربرادرزکنسٹرکٹرزکی دو علیحدہ علیحدہ رٹ درخواستوں کی سماعت جس میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ مذکورہ دونوں کمپنیوں کو ڈائریکٹوریٹ آف سمال ڈیمزکی سکروٹنی کمیٹی نے ہری پور اورنوشہرہ میں سمال ڈیمز کی تعمیرات کے لئے جاری ہونے والے پراجیکٹس کے لئے نااہل قرار دیاحالانکہ اس حوالے سے ہائی کورٹ نے ہدایت جاری کی تھیں کہ درخواست گذارکمپنیوں کو فارم جاری کئے جائیں مگراس کے با وجود درخواست گذاروں کو فارم جاری نہیں کئے گئے اورآج سترہ جنوری کو ہونے والے ٹینڈروں کے خلاف حکم امتناعی جاری کرچکی ہے کیونکہ متعلقہ حکام اپنے اختیارات سے تجاوزکررہے ہیں اورمن پسندافراد کو ٹھیکہ دلوانے کی کوشش کی جارہی ہے دوسری جانب ایڈیشنل ایڈوکیٹس جنرل ربنواز اورمجاہدعلی نے عدالت کوبتایا کہ اشتہار کے مطابق جو کمپنیاں اس ٹینڈرمیں حصہ لینے کے مجازہوں گے اسے اپنے شعبے میں مہارت درکارتھی جو درخواست گذار کمپنیوں کے پاس نہ تھی اوراسی کو بنیاد بناکرانہیں نااہل قرار دیاگیاہے اور اگر درخواست گذاروں کو کوئی شکایت ہے تو وہ اس حوالے سے کیپراسے رجوع کرسکتے ہیں عدالت نے دلائل مکمل ہونے پردرخواستیں کیپراکو ارسال کرتے ہوئے جمعہ کے روز تک ٹینڈراوپن کرنے سے روک دیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر