صاف پانی پراجیکٹ کیس ، نامزدا فسروں کی تنخواہوں اور بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات 22 جنوری تک طلب

صاف پانی پراجیکٹ کیس ، نامزدا فسروں کی تنخواہوں اور بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات ...

لاہور(نامہ نگار) سینئر سپیشل جج اینٹی کرپشن جوادالحسن نے صاف پانی کیس کے ملزمان کی درخواست ضمانتوں کی سماعت کے دوران تمام نامزد افسروں کی تنخواہوں اور بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات 22جنوری تک طلب کرلی ہیں۔سینئر سپیشل جج کی عدالت میں صاف پانی پراجیکٹ کیس میں نامزد چیف ایگزیکٹو وسیم اجمل ظہرالدین، اقتدارعلی شاہ، وارث ملک ،طاہرعمران، امجد محمود اورشفاعت علی سمیت نو ملزمان کی درخواست ہائے ضمانت کی سماعت ہوئی۔عدالت نے بحث کے دوران وسیم اجمل سے پوچھا کہ وہ کیا تنخواہ لیتے تھے ،جس پر بتایا گیا کہ 10لاکھ روپے لیتے تھے۔ عدالت نے تمام ملزمان سے فرداً فرداً تنخواہوں کے بارے میں پوچھا تو کوئی بھی ملزم ایسا نہیں تھا جس کی تنخواہ لاکھوں سے کم ہو، عدالت نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اتنی تنخواہیں لینے کے باوجود کرپشن ہوئی۔عدالت نے مقدمے کی تفتیشی افسرنازیہ حسین کو حکم دیا کہ 22جنوری تک ملزمان کی تنخواہوں اور اکاؤنٹس کی تفصیلات پیش کی جائیں۔درخواستوں کی سماعت کے دوان وکلا ء نے موقف اختیار کیا کہ ملزمان بے گناہ ہیں جو ملزم جیل میں ہیں ان کی ضمانت منظور کی جائے جس پرعدالت نے برہمی کا اظہارکرتے ہوئے ریمارکس دئے کہ اگر یہ بے گناہ ہیں تو صاف پانی انتظامیہ نے پرچہ کیوں کرایا؟عدالت نے مذکورہ بالا ریمارکس کے ساتھ کیس کی مزید سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...