” اس ملک کے بینک میں فوری 200 ارب روپے ڈال دو“سعودی بادشاہ نے حکم دیدیا

” اس ملک کے بینک میں فوری 200 ارب روپے ڈال دو“سعودی بادشاہ نے حکم دیدیا
” اس ملک کے بینک میں فوری 200 ارب روپے ڈال دو“سعودی بادشاہ نے حکم دیدیا

  


ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن) سعودی عرب دہشتگردی کیخلاف جنگ اور پڑوسی ملک میں آئینی حکومت کی مدد کیلئے برسرپیکار ہے اور اب یمن کیلئے دو ارب ڈالر کی امداد کا اعلان کردیاجس کا مقصد یمن کے شہریوں کی مالی مشکلات کو کم کرنا ہے ۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب نے 2 بلین ڈالر یمن کے مرکزی بینک میں منتقل کر نے کااعلان کیاہے اورسعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے حکم نامہ جاری کردیا۔ سعودی وزارت داخلہ کے بیان کے مطابق یہ مالی امداد باغیوں کی جنگی سرگرمیوں کے سبب یمن میں پیدا ہونے والی خراب معاشی صورت حال سے نمٹنے کے لیے فراہم کی جا رہی ہے، اس سے نہ صرف ریال کی قد میں اضافہ ہوگا بلکہ یمن کے شہریوں کی زندگی میں بھی مثبت تبدیلی آئے گی۔

سعودی خبررساں ایجنسی کے مطابق اس امداد سے باغیوں کے جنگی جرائم سے ہونیوالے نقصانات سے نمٹنے میں مدد ملے گی ۔ حوثی باغیوں پر بینک لوٹنے، سرکاری ریونیوز پر قبضہ کرنے جیسے الزامات ہیں ۔

دوسری طرف سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے باور کرایا ہے کہ آن کے ملک کی جانب سے یمن اس کی آئینی قیادت اور معیشت کے لیے تائید کا سلسلہ جاری رہے گا تا کہ یمن کو تمام شعبوں میں درپیش حالیہ چیلنجوں پر قابو پایا جا سکے۔وہ یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی سے ٹیلیفونک گفتگو کررہے تھے ۔ بات چیت میں دونوں شخصیات نے یمن کے بحران کی تازہ ترین صورت حال اور یمنی عوام کو درپیش حالیہ اقتصادی چیلنجوں پر تبادلہ خیال کیا۔

مزید : عرب دنیا /بزنس


loading...