گزشتہ روز جلسے میں عمران خان نے طاہر القادری کا ہاتھ کیوں جھٹکا؟ حیران کن حقیقت سامنے آ گئی، جان کر نواز شریف کی بھی ہنسی نکل جائے گی

گزشتہ روز جلسے میں عمران خان نے طاہر القادری کا ہاتھ کیوں جھٹکا؟ حیران کن ...
گزشتہ روز جلسے میں عمران خان نے طاہر القادری کا ہاتھ کیوں جھٹکا؟ حیران کن حقیقت سامنے آ گئی، جان کر نواز شریف کی بھی ہنسی نکل جائے گی

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) علامہ طاہر القادری کے گزشتہ روز لاہور میں ہونے والے جلسے کے دوران سب نے وہ منظر دیکھا جب طاہر القادری نے عمران خان کا ہاتھ پکڑنے کی کوشش کی مگر عمران خان نے ان کا ہاتھ جھٹک دیا اور سٹیج پر جا کر بیٹھ گئے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”محلے کی عورت نے پولیس کو فون کر کے بتایا کہ۔۔۔“ معصوم زینب کو اغواءکے بعد جس مکان میں رکھا گیا وہ مل گیا، عورت نے پولیس کو فون کر کے کیا بتایا؟ ویڈیو نے سوشل میڈیا پر تہلکہ مچا دیا

یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تو ہر کوئی اس کے پیچھے چھپی وجہ جاننے میں لگ گیا مگر اب تک معلوم نہ ہو سکا تھا کہ کپتان کے غصے کے پیچھے چھپی حقیقت کیا ہے۔ لیکن اب یہ وجہ سامنے آ گئی ہے اور انکشاف ہوا ہے کہ عمران خان اپنی کرسی پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں کیساتھ لگانے پر سیخ پا ہو گئے تھے اور اس وجہ سے ہی انہوں نے طاہر القادری کا ہاتھ جھٹک کر اپنے غصے کا اظہار بھی کیا۔

معروف صحافی غریدہ فاروقی نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ”عمران خان جب جلسے میں سٹیج پر آئے تو ان کی باڈی لینگوئج سخت تھی اور چہرے کے تاثرات بھی کچھ زیادہ اچھے نہ تھے کیونکہ ان کو پہلے سٹیج پر اس جگہ لایا جا رہا تھا جہاں پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن، منظور وٹو اور قمر زمان کائرہ سمیت دیگر رہنماءبیٹھے تھے۔

عمران خان کے آنے سے پہلے طاہر القادری بھی ان رہنماﺅں کیساتھ ہی بیٹھے تھے اور یہیں پر ان کیساتھ عمران خان کیلئے کرسی لگوائی گئی لیکن جیسے ہی عمران خان آئے اور انہیں بتایا گیا کہ انہوں نے پیپلز پارٹی کے لوگوں کیساتھ بیٹھنا ہے تو وہ شائد اس سے ناراض نظر ہو گئے اور ان کے آتے آتے فوراًقادری صاحب بھی اٹھ کر سٹیج کے دوسری طرف چلے گئے اور عمران خان کی کرسی بھی ہٹا لی گئی۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔سہاگ رات پر پاکستانی دولہا کی ایسی شرمناک ترین حرکت کے دلہن کی موت ہو گئی، ایسی تفصیلات کے کوئی آدمی تصور بھی نہیں کر سکتا

یہاں تک کہ عمران خان نے شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین، جو کہ پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں کیساتھ بیٹھے ہوئے تھے، کو اٹھا کر اپنے پاس بلا لیا۔ تو یہ پیپلز پارٹی کیلئے ایک سیاسی سبکی کا مقام بھی ہے کہ اعتزاز احسن اور قمر زمان کائرہ جیسے بڑے رہنماءیہاں بیٹھے ہوئے ہیں لیکن عمران خان نے شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین کو ان کیساتھ بیٹھنے نہیں دیا اور انہیں اپنے پاس بلا کر ان کی جگہ فواد چوہدری کو بھیج دیا۔“

۔۔۔ویڈیو دیکھیں۔۔۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...