پاکستان کے 6چیف جسٹس اپنے اپنے دور میں بہت مقبول ہوئے

پاکستان کے 6چیف جسٹس اپنے اپنے دور میں بہت مقبول ہوئے

  

لاہور ( رپورٹ ، عباس تبسم )پاکستان کی اب تک کی تاریخ میں لاہور ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس مولوی مشتاق حسین، جنہوں نے ذوالفقار علی بھٹو کی سزائے موت کا فیصلہ سنایا تھا، کے علاوہ سپریم کورٹ کے 4 چیف جسٹس نے بہت زیادہ مقبولیت حاصل کی جبکہ جسٹس ( ر ) منیر کے 1954 گونر جنرل غلام محمد کی طرف سی اسمبلی توڑے جانے کے اقدام کو اب تک تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے کہ انہوں نے پاکستانی عدلیہ میں نظریہ ضرورت کو رواج دیا ، جو چیف جسٹس مقبول ہوئے ان میں ان میں سے چیف جسٹس(ر) محمد حلیم نے بحیثیت چیف جسٹس بینظیر بھٹو کیس کا اہم ترین فیصلہ تحریر کیا تھا جس کی وجہ سے پی پی پی کی چیئرپرسن 1988 کے عام انتخابات لڑنے کے لیے اہل قرار پائی تھیں۔ان کے بعد نسیم حسن شاہ نے بطور چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان اس وقت کے صدر غلام اسحٰق خان کی جانب سے نواز شریف کو معزول کیے جانے کے خلاف دائر کیس میں فیصلہ سنایا تھا، جس کے نتیجے میں نواز شریف وزیراعظم کے عہدے پر بحال ہوگئے تھے۔ان کے علاوہ افتخار محمد چوہدری معروف چیف جسٹس رہے، جو مشرف کے خلاف شروع ہونے والی وکلا تحریک کے آغاز کی وجہ بنے جبکہ ان کی وجہ شہرت از خود نوٹسز بھی تھے، افتخار محمد چوہدری نے اپنے دور میں چیف جسٹس کو حاصل از خود نوٹس کے اختیار کا خوب استعمال کیا۔ان کے بعد مقبول ترین چیف جسٹس میاں ثاقب نثار ہیں، جن کی وجہ شہرت از خود نوٹسز اور عوامی مسائل سے متعلق معاملات میں خصوصی دلچسپی تھی، اس کے علاوہ میاں ثاقب نثار کی جانب سے مقدمات کی سماعت کے دوران جو ریمارکس دیے جاتے تھے انہیں بھی عوام میں کافی مقبولیت حاصل ہوئی۔

مقبول چیف جسٹس

مزید :

صفحہ اول -