چوراہوں گاڑیوں کے شیشے صاف کرنے والے بچوں کی بحالی اور انہیں تعلیم دلانے کیلئے درخواست دائر

چوراہوں گاڑیوں کے شیشے صاف کرنے والے بچوں کی بحالی اور انہیں تعلیم دلانے ...

  

پشاور(نیوزرپورٹر)خیبرپختونخوااوربالخصوص صوبائی دارالحکومت پشاورکی شاہراہوں پربھیک مانگنے اورچوکوں میں گاڑیوں کے شیشے صاف کرنے والے بچوں کی بحالی اور انہیں تعلیم دلانے کیلئے پشاورہائی کورٹ میں آئینی درخواست دائرکردی گئی ہے جبکہ عدالت عالیہ کی جسٹس مس مسرت ہلالی اور جسٹس محمدایوب خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے خیبرپختونخواحکومت سے جواب مانگ لیاہے رٹ پٹیشن نورعالم خان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائرکی گئی ہے جس میں خیبرپختونخواحکومت ٗ محکمہ سوشل ویلفیئراوردیگرمتعلقہ حکام کوفریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیاگیاہے کہ خیبرپختونخوااوربالخصوص صوبائی دارالحکومت پشاورکی مختلف شاہراہوں اورچوکوں میں سینکڑوں کی تعداد میں ایسے بچے موجود ہیں جوبھیک مانگ رہے ہیں اورگاڑیوں کے شیشے صاف کرکے زندگی گذاررہے ہیں جبکہ یہ عمران کی تعلیم حاصل کرنے اوربہترتربیت کی ہے اسی طرح سینکڑوں کمسن مختلف دکانوں میں کام کررہے ہیں جو چائلڈلیبرکے زمرے میں آتے ہیں لہذاان بچوں کو قانونی تحفظ دیاجائے اوران سٹریٹ چائلڈزکی بحالی اورانہیں تعلیم دلوانے کے لئے اقدامات کئے جائیں عدالت عالیہ کے دورکنی بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد صوبائی حکومت سے جواب مانگ لیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -