پسند کی شادی کرنیوالی لڑکی کا چیمبر میں جوڈیشل مجسٹریٹ پر زیادتی کا الزام، نوکری ہی خطرے میں پڑ گئی

پسند کی شادی کرنیوالی لڑکی کا چیمبر میں جوڈیشل مجسٹریٹ پر زیادتی کا الزام، ...
پسند کی شادی کرنیوالی لڑکی کا چیمبر میں جوڈیشل مجسٹریٹ پر زیادتی کا الزام، نوکری ہی خطرے میں پڑ گئی

  



کراچی (ویب ڈیسک) چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ نے سیہون میں پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کے ساتھ زیادتی کا نوٹس لیتے ہوئے جوڈیشل مجسٹریٹ سیہون امتیاز حسین بھٹو کو معطل کر دیا۔

سندھ ہائی کورٹ کے ذرائع کے مطابق جوڈیشل مجسٹریٹ سیہون امتیاز حسین بھٹو کو مس کنڈکٹ کی بنیاد پر معطل کیا گیا ہے اور انہیں سندھ ہائی کورٹ رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔سندھ ہائی کورٹ کے حکم پر سیشن جج نے معاملے کی انکوائری کی اور اپنی رپورٹ میں واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے فوری طور پر جوڈیشل مجسٹریٹ کے خلاف کارروائی کی سفارش کی تھی۔

متاثرہ لڑکی نے الزام عائد کیا تھا کہ جج نے اپنے چیمبر میں اسے زیادتی کا نشانہ بنایا ہے، جبکہ میڈیکل رپورٹ میں لڑکی سے زیادتی کی تصدیق کی جا چکی ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی