اِن ہاؤس تبدیلی غیر قانونی ہے نہ ہی غیر سیاسی، یہ پارلیمنٹ کا حق ہے: شہباز شریف

اِن ہاؤس تبدیلی غیر قانونی ہے نہ ہی غیر سیاسی، یہ پارلیمنٹ کا حق ہے: شہباز ...
اِن ہاؤس تبدیلی غیر قانونی ہے نہ ہی غیر سیاسی، یہ پارلیمنٹ کا حق ہے: شہباز شریف

  



لندن(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان  مسلم لیگ ن کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہاہے کہ اِن ہاؤس تبدیلی نہ غیر قانونی ہے اور نہ ہی غیر سیاسی بلکہ یہ پارلیمنٹ کا حق ہےاورپارلیمان جب چاہے اسے استعمال کرسکتی ہے،ملک میں گندم اور آٹے کا بحران جاری ہے، وزیراعظم، وزیر خوراک تمام ذمہ داران غائب ہیں،عمران نیازی صاحب لاؤ لشکر کے بغیر عام آدمی کے طورپر بازار جائیں تاکہ آٹے دال کا بھاؤ معلوم ہو،بجلی، گیس، گندم، ترقیاتی کاموں سمیت ہر شعبے کی تنزلی اور قوم کی مشکلات دیکھ کر دل خون کے آنسو روتاہے۔

لندن میں پاکستانی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کا کہنا تھا کہ اِن ہاؤس چینج ایک قانونی اور آئینی طریقہ کار ہے، یہ پارلیمنٹ کا حق ہے، وہ جب بھی چاہے اس کو استعمال کرسکتی ہے ، ان ہاﺅس تبدیلی کی بات نہ تو غیر سیاسی ہے اور نہ ہی غیر آئینی ہے۔شہباز شریف کا کہنا تھا کہ نیب نیازی گٹھ جوڑ کا اس سے بڑا ثبوت کیا ہوگا کہ ابھی تک نیب نے ایک لفظ بھی نہیں بولا اور نہ ہی کوئی ریفرنس دائر کیا ہے لیکن وزرا نے پہلے ہی بیان دینا شروع کردیے ہیں جس سے واضح ہوگیا ہے کہ یہ نیب نیازی کا ناپاک گٹھ جوڑ ہے ۔

شہبازشریف نے گندم اور  آٹے کی قیمت میں اضافے اوربحران کی شدید مذمت  کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں تاریخی گندم بحران اورآٹے کی قیمت میں اضافے کی کیا وجوہات ہیں؟قوم کو اصل حقائق کے بارے میں بتایاجائے، قوم کو بتایا جائے کہ گندم کا سٹاک کہاں گیا؟کیا سمگل ہوگیا؟ کہاں غائب ہوگیا؟ اس کا ذمہ دار کون ہے ؟گندم اور آٹے کے بحران سے کون فائدہ اٹھارہا ہے؟پاکستان مسلم لیگ(ن)کےدورمیں الحمداللہ فصلوں کی ریکارڈ پیدوار ہوئی اورگندم کا بھرپور سٹاک موجود تھا،پاکستان مسلم لیگ (ن) کے دورمیں الحمداللہ پاکستان گندم برآمد کررہا تھا۔اُنہوں نے کہا کہ ملک میں گندم اور آٹے کا بحران جاری ہے،وزیراعظم، وزیر خوراک تمام ذمہ داران غائب ہیں عوام کو ملک بھر میں سرعام لوٹا جارہا ہے اور وفاقی وصوبائی حکومتوں کی آنکھیں بند ہیں،میڈیا ہر پل گندم، آٹے اور روٹی کے ستائے عوام کی دہائی دےرہاہے،وزیراعظم نے شاید اب تک ٹی وی آن نہیں کیا؟عمران نیازی صاحب لاؤ لشکر کے بغیر عام آدمی کے طورپر بازار جائیں تاکہ آٹے دال کا بھاؤ معلوم ہو،وفاقی اور صوبائی سطح پر حکومتی غفلت، لاپرواہی اور بدانتظامی کی سزا غریب عوام کو مل رہی ہے گندم کی قلت کا ذمہ دار کون ہے؟ اس کا تعین کیاگیا؟گندم کی فراہمی میں کوئی گڑبڑتھی تو اس کا اب تک نوٹس کیوں نہیں لیاگیا؟ اگر مسئلہ گندم کی فراہمی کا ہے تو فوری گندم فراہم کرکے اس مسئلے کو حل کیوں نہیں کیاگیا؟عمران نیازی صاحب ٹویٹس کرنےکےبجائےگندم اورآٹےپرفوری اجلاس بلاتے؟ بتائیں ذمہ داروں کےخلاف کیاکارروائی کی؟۔میاں شہباز شریف نے کہا کہ بجلی، گیس، گندم، ترقیاتی کاموں سمیت ہر شعبے کی تنزلی اور قوم کی مشکلات دیکھ کر دل خون کے آنسو روتاہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں